سعودی عرب اور بحرین میں کورونا ٹیکہ کاری شروع

سرینگر//سعودی عرب اور بحرین نے کورونا ویکسین کو عام افراد کو لگانا شروع کردیا۔ دونوں ممالک اسلامی دنیا کے پہلے ممالک بن گئے، جہاں ٹیکہ کاری کا آغاز ہوگیا۔سعودی عرب رواں ماہ 10 دسمبر کو پہلا اسلامی ملک بنا تھا، جس نے امریکی کمپنی فائزر و جرمن کمپنی بائیو این ٹیک کی ویکسین کے استعمال کی اجازت دی تھی۔اسی طرح بحرین نے بھی رواں ماہ 12 دسمبر کو چین کی کمپنی کی جانب سے تیارہ کردہ ویکسین کے استعمال کی منظوری دی تھی۔بحرین بھی متحدہ عرب امارات (یو اے ای) کے بعد دوسرا ملک بنا تھا، جس نے چین کی کورونا ویکسین کے استعمال کی منظوری دی تھی۔ اب بحرین اور سعودی عرب میں کوروناٹیکہ کاری شروع کردی گئی جب کہ یو اے ای میں پہلے ہی کورونا ویکسینیشن شروع کی جا چکی ہے۔سعودی عرب میں کورونا کی پہلی ویکسین 17 دسمبر کو جن چند افراد کو لگائی گئی، ان میں مملکت کے وزیر صحت بھی شامل ہیں۔سعودی عرب کو 16 دسمبر کو جرمن و امریکی کمپنی کی جانب سے ویکسین کی پہلی کھیپ ملی تھی، جس کے بعد17 دسمبر کو ویکسینیشن کا آغاز کیا گیا۔ویکسین کیلئے حکومت نے سعودی عرب بھر میں خصوصی سینٹرز بنائے ہیں اور صرف ریاض کی ریاست میں ہی550 سینٹرز بنائے گئے ہیں۔سعودی عرب میں تمام افراد کو مفت کورونا ویکسین فراہم کی جائے گی اور ابتدائی طور پر کورونا سے تحفظ کے لیے کام کرنے والے فرنٹ لائن ورکرز کو ویکسین فراہم کی جائے گی۔سعودی عرب کی طرح خلیجی ملک بحرین میں بھی17 دسمبر کو ویکسینیشن کا آغاز کردیا گیا اور وہاں پر چین کی ویکسین لگائی جا رہی ہے۔