سرینگر کیلئے فضائی کرایہ کم کیا جائے

سرینگر//ریاستی گورنر ستیہ پال  ملک نے وزیر اعظم ہند کو موسم سرما کے دوران کشمیر میں فضائی کرایہ میں بے تحاشہ اضافہ حل کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ دہلی سے دبئی تک کے مقابلے میں دہلی سے وادی کا فضائی کرایہ زیادہ ہے۔ریاستی گورنر ستیہ پال ملک نے ایس کے آئی سی سی میں اتوار کو وزیر اعظم نریندر مودی کی تقریر سے قبل انہیں فضائی کرایہ میں اضافے سے درپیش مشکلات سے آگاہ کیا۔  انہوں نے کہا’’ سردیوں میں فضائی کرایہ 28 ہزار  روپے تک پہنچ جاتا ہے،جبکہ دبئی تک کرایہ صرف24 ہزار روپے ہے‘‘۔گورنر کا کہنا تھا کہ سرما کے دوران وادی کشمیر میں نوجوان طلبہ کو کافی ساری مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔انہوں نے کہا کہ موسم سرما میں لوگ جموںمیں پھنس جاتے ہیں اور تمام انتظامیہ بشمول چیف سیکریٹری اور صوبائی کمشنر کو متحرک ہوکر مسائل کا ازالہ کرنا پڑتا ہے،اور وادی کشمیر میں فضائی سفر کرنا ناممکن بن جاتا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ طلاب کو جب امتحانات میں شمولیت کرنے کیلئے بیرون ریاستوں میں جانا پڑتا ہے یا لوگوں کو ضروری سفر کرنا پڑتا ہے تو کرائیوں سے انہیں مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔گورنر کا کہنا تھا’’ ایک دفعہ ہمیں فوج سے جہازمل گیا،تاہم دوسرے روز وہ(فضائی کمپنیاں) ایک پیسہ کم کرنے کیلئے تیار نہیں تھے۔انہوں نے کہا کہ اس بات کی ضرورت ہے کہ فضائی کمپنیاں یہ سمجھ لیں اور کرائیوں میں کمی کریں۔ان کا کہنا تھا’’اس سے بڑی ناانصافی کیا ہوسکتی ہے ؟سیاحت میں کس طرح اضافہ ہوگا،کس طرح ترقی ہوگی،انہوں نے وزیر اعظم سے مخاطب ہوکر کہا کہ انہیں امید ہے کہ وہ دہلی پہنچ کر اس مسئلے کو دیکھیں گے۔انکا کہنا تھا’’ہر ایک اپنا مطالبہ رکھتا ہے،اور ہمارا مطالبہ یہ ہے کہ وزیر اعظم اس مسئلے کو دیکھیں۔اس موقعہ پر ریاستی گورنر نے کہا کہ گزشتہ6ماہ کے دوران ریاست میں جو بھی ترقیاتی پروجیکٹ شروع کئے گئے یا جو بھی کام کئے گئے وہ وزیر اعظم کی ہدایت پر کئے گئے۔انہوں نے کہا کہ نریندر مودی نے انہیں ہدایت دی کہ وہ ریاست سے کورپشن کا خاتمہ کر کے شکایتوں کو دور کریں اور بچوں کیلئے تعلیم کے ساتھ ساتھ کھیل کود کی سرگرمیوں کو بھی دوام بخشے۔ ملک نے کہا’’ وزیر اعظم کے ہی رہنما خطوط پر خطوں میں حق تلفی اور نابرابری کو دور کر کے8 00کروڑ روپے کے پروجیکٹ شروع کئے گئے اور اس میں سے3ہزار کروڑ روپے واگزار بھی کئے گئے۔انہوں نے کہا کہ سرپنچوں کو بھی70لاکھ روپے سے لیکر ڈیڑ ھ کروڑ روپے کے رقومات ترقیاتی کاموں کیلئے واگزار کرائے جائیں گے۔