سرینگر میں بی بی وِیاس کاعوامی دربار

سری نگر//لوگوں کو درپیش مسائل کو تیز تر بنیادوں پر حل کرانے کی غرض سے گورنر کے مشیر بی بی وِیاس نے یہاں جے کے گورنرس گریونس سیل میں ایک عوامی دربار کا انعقاد کیا۔400سے زائد وفود اور 60افراد نے مشیر موصوف کے ساتھ ملاقات کی اور اُنہیں اپنے اپنے مسائل سے آگاہ کیا۔پی ایچ ڈی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹریز کشمیر چپٹر، کشمیر ٹریڈریس اینڈ منیفکچرس فیڈریشن اور کشمیر یوتھ انٹرپرینوررس فیڈریشن نے بجلی فیس کی ادائیگی ، رجسٹریشن ، کئی سیکٹروں میں جی ایس ٹی سے استثنیٰ ، سیلاب سے متاثرہ تاجروں کی باز آباد کاری جیسے معاملات کے علاوہ مختلف سکیموں کے تحت مراعات کی واگذاری کو اُجاگر کیا۔اسی طرح جموں وکشمیر سینٹرل ٹریڈ یونین کاڈی نیشن کمیٹی نے ایس  آر  او 520 کی عمل آوری کا مطالبہ کیا تاکہ مختلف زمروں کے ملازمین کی نوکریوں کو باقاعدہ بنایاجاسکے۔اُنہوں نے مختلف کاڈروں میں تنخواہوں کی تفاوت کو دُور کرنے کا معاملہ بھی اُجاگر کیا۔کاریگروں کے ایک گروپ نے سیلاب 2014ء سے متاثرین کو ریلیف دینے کا مطالبہ کیا ۔کشمیر یوتھ انٹرپرینورس فیڈریشن نے رُوسی سفیدوں کی ایک خاص قسم پر مکمل طور پابندی لگانے کا مطالبہ کیااور کہا کہ اسے غیر رہائشی علاقوں میں کاشت کیا جانا چاہیئے۔سری نگر کے مختلف علاقوں سے آئے کئی مختلف وفود نے ڈرنیج نظام میں بہتری لانے کا مطالبہ کیا۔ ان علاقوںمیں پرانا شہر، ملہ باغ، بٹہ شا ہ محلہ لال بازار ، شالہ ٹینگ او ربمنہ شامل ہیں۔ترال ، گاندربل ، شانگس ، بجبہاڑہ ، بہی باغ کولگام ، لیتہ پورہ ، بٹہ پورہ ٹنگمرگ کنزراور مرہامہ کپواڑہ کے وفود نے اپنے اپنے علاقوں کے ترقیاتی مسائل مشیر کے سامنے رکھے۔ایم ایل اے شانگس گلزر احمد وانی کی قیادت والے وفد نے حلقے کے مسائل کو واضح کرتے ہوئے ان کے تیز تر نپٹارے کے لئے حکومت کی مداخلت طلب کی۔ترال کے ایک وفد نے حضرت امیر کبیرؒ زیارت گاہ پر سست رفتاری سے ہو رہے کام کو نوٹس میں لایا ۔اُنہوں نے کہا کہ علاقے میں ایک ٹوراِزم ڈیولپمنٹ اتھارٹی قائم کی جانی چاہیئے۔کشمیر یونیورسٹی کے لیزان افسروں کے ایک وفد نے تنخواہوںمیں تفاوت کو دُور کرنے کا مطالبہ کیا۔ ایم جی نریگا اور آئی ڈبلیو ایم پی سکیم کے تحت کام کر رہے ملازمین کے ایک وفد نے بھی اپنے اپنے مسائل مشیر کے سامنے رکھے۔اس دوران ڈیزاسٹر منیجمنٹ ڈگری ہولڈروں ، پی ایس سی لیکچررس ایسو سی ایشن ، جے کے ایس آر ٹی ایمپلائز  ایسو سی ایشن، پی ڈی ڈی کے جموں و کشمیر ڈپلوما ایسو سی ایشن اور دیگر وفود نے اپنے اپنے مسائل اور معاملات بی بی وِیاس کی نوٹس میںلائے ۔بی بی وِیاس نے یہ مطالبات غور سے سنے اور یقین دلایا کہ انہیں معیاد بند مدت کے اندر پورا کیا جائے گا۔ اُنہوں نے کئی ایک مسائل کو موقعہ پر ہی حل کرنے کی ہدایات دیں۔ اُنہوں نے کہا کہ حکومت مختلف علاقوں کی مساوی ترقی کو یقینی بنانے کی طرف خصوصی توجہ دے رہی ہے تاکہ لوگوں کے مسائل حل کئے جاسکیں۔