سرینگر لداخ شاہراہ کوآج گاڑیوں کیلئے کھول دیئے جانے کاامکان

گاندربل//جمعرات کو زوجیلا پر پسیاں اور برفانی تودے گرآنے کی وجہ سے سرینگر لداخ شاہراہ جمعہ کوپانچوں روزبھی ٹریفک کیلئے بند رہی جبکہ شمالی ضلع کپوارہ کے سرحدی علاقوں کو جانے والی سڑکوں پر سے بھی برف ہٹاکر اُنہیں گاڑیوں کی آمدورفت کیلئے بحال کیا گیا۔23نومبرکو ہوئی برف باری کے نتیجے میں حکام نے434کلومیٹرطویل سرینگرلداخ شاہراہ کواحتیاطی طور گاڑیوں کی نقل وحمل کیلئے بند کردیاتھاجس کی وجہ سے کرگل ،دراس اور سونہ مرگ کے مختلف مقامات پرسینکڑوں مال اور مسافر گاڑیاں درماندہ ہوگئیں تھی۔اس شاہراہ کوآمدورفت کے قابل بنانے کیلئے پروجیکٹ وجیک اور بارڈس روڈس آرگنائزیشن نے ہنگامی بنیادوں پر جمعہ کوبرف ہٹانے کا کام مکمل کیاجس کے بعد دراس اور گومری سے200فوجی گاڑیوں کو سونہ مرگ کیلئے روانہ کیاگیا۔آئی جی پی ٹریفک کشمیر پی نمگیال نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ سنیچروار کو اگر موسم صاف رہا اورسڑک پر پھسلن پیدانہیں ہوگی توگاڑیوں کوسونہ مرگ سے کرگل جانے کی اجازت دی جائے گی ۔ا س دوران گگن گیر میں ٹریفک جام کی وجہ سے مسافر گاڑیوں کو جمعہ کو مشکلات کا سامنا کرناپڑاجبکہ لداخ جانے والے مسافروں کو گگن گیر میں ہوٹلوں میں جگہ نہ ملنے کی وجہ سے پریشانیاں درپیش ہیں۔اس دوران حالیہ برف باری کے بعد کپوارہ ضلع کے سرحدی علاقوں کو جانے والی سڑکوں پرسے جمعہ کو برف ہٹانے کاکام مکمل کیاگیا اوران سڑکوں پر گاڑیوں کی آمدورفت بحال ہوگئی ۔جمعرات کوموسم میں تبدیلی اور دھوپ نکلنے کے ساتھ ہی 109بیکن کے عملہ نے کیرن اورکرناہ سڑکوں پربرف ہٹانے کی مشینوں کو کام پرلگایااورچندہی گھنٹوں میں کیرن اورکرناہ سڑک کو گاڑیوں کی آمدورفت کیلئے بحال کردیا۔