سرینگر جموں شاہراہ سے متعلق ایڈوائزری جاری|مرمت کیلئے10دن درکار

سرینگر//سرینگرجموں شاہراہ جورام بن کے قریب کیلا موڈکے قریب اتوار کوڈھہ گئی تھی ،کوقابل آمدورفت بنانے کیلئے دس دن کا وقت لگے گا اور اس دوران سڑک رابطے کوبحال رکھنے کیلئے ایک جھولا پل بیکن تعمیر کرے گا۔اس بات کی جانکاری ٹریفک کیلئے جاری ایک ایڈوائزری میں دی گئی ہے ۔حکام کے مطابق سڑک کی دیوار تعمیر اور اس کی کنکریٹ سے بھرائی کرنے میں دس دن کا وقت لگنے کا امکان ہے۔ٹریفک ایڈوائزری میں بتایا گیا ہے ،’’جموں سرینگر شاہراہ  رام بن کے قریب کیلا موڑ پر اتوارشام کو سڑک کی دیوار کے ڈھہ جانے کی وجہ سے بند رہے گی ۔نیشنل ہائی وے اتھارٹی آف انڈیا کے پروجیکٹ ڈائریکٹر کے مطابق سڑک کو قابل آمدورفت بنانے میں تقریباًدس روز لگیں گے ۔‘‘  اس دوران ٹریفک ایڈوائزری میں کہاگیا ہے کہ شہ رگ کے موافق اس سڑک رابطے کو بحال کرنے کیلئے بارڈرروڈس آرگنائزیشن ایک جھولا پل نصب کرے گا۔ٹریفک ایڈوائزری میں کہاگیا ہے کہ جموں ڈوڈہ کشتواڑ،جموں رام بن ،گول سنگلدان،مگھرکوٹ بانہال اور بانہال قاضی گنڈ سڑک رابطے کھلے ہیں ۔یہ بات قابل ذکر ہے کہ بھاری برف باری کے بعد پسیاں اور پتھروں کے گرآنے کی وجہ سے ایک ہفتہ تک بند رہنے کے بعد گزشتہ سنیچروار کواس سڑک کویکطرفہ ٹریفک کیلئے کھلاچھوڑ دیاگیاتھا۔برف جمع ہونے کی وجہ سے کشمیر وادی کو خطہ پیرپنچال سے جوڑنے والی مغل روڈ بھی بند ہے ۔اس دوران سڑک کی دیکھ ریکھ میں کوتاہیاں برتنے پرانتظامیہ کو ہداف تنقید بنایا جارہاہے ۔سرینگر جموں شاہراہ کے طویل عرصہ تک بند رہنے کی وجہ سے وادی میں اشیائے ضروریہ کی سپلائی متاثر ہوئی ہے اور بازاروں میں سبزیوں اور دیگر اشیائے خوردنی کے داموں میں اضافہ ہوا ہے۔تاہم حکام کا کہنا ہے کہ وادی میں ایندھن اور رسوئی گیس کاوافر ذخیرہ موجود ہے ،جوسرینگر جموں شاہراہ کے بحال ہونے تک کے وقفے کیلئے کافی ہے۔
 

فضائیہ کی لداخ اورجموں وکشمیرکے درمیان پروازیں

۔286مسافروں کو ائرلفٹ کیا

نیوز ڈیسک
 
سرینگر//بھارتی فضائیہ نے لداخ میں درماندہ 286 افراد کولداخ اورجموں کشمیرکے درمیان ائرلفٹ کیا۔ایک سرکاری اہلکار کے مطابق کل 286 درماندہ مسافروں کومنگلوار کے روز C-130، C-17 اور AN-32 طیاروں میں جموں اورکشمیراورلداخ کے درمیان ائیرلفٹ کیاگیا۔انہوں نے کہا ،’’21مسافر سرینگر سے لیہہ پہنچائے گئے ،35سرینگر سے کرگل، 19کرگل سے سرینگر،21جموں سے کرگل،70کرگل سے جموں اور 120لیہہ سے جموں پہنچائے گئے۔کرگل کوریئرسروس کے چیف کارڈنیٹرعامرعلی نے کہا ،’’سرینگر کرگل سڑک بند ہونے کی وجہ سے AN-32 کوریئرسروس کرگل اورجموں کے درمیان ہفتے میں تین بار،جبکہ کرگل اور سرینگر کے درمیان ہفتے میں دوبار اُڑان بھرتی ہے۔‘‘ انہوں نے کہا کہ اس سروس کو حالیہ خراب موسم کے دوران منسوخ کیا گیاتھا اور لداخ انتظامیہ نے مرکزی وزارت دفاع سے درخواست کی تھی کہ مسافروں کے رش کو مدنظر رکھتے ہوئے C-130،C-17اورAN-32طیاروں کوکام پر لگایا جائے۔انہوں نے مزیدکہا کہ آج یعنی بدھوار کوAN-32کرگل کوریئر سروس سرینگر اور کرگل اور جموںاورکرگل کے درمیان پھر اُڑان بھرے گی۔