سرینگر جموںشاہراہ پر عام ٹریفک پر پابندی کا معاملہ، بدھ کی بندشیں ہٹائیں گئیں

سرینگر // ریاستی حکومت نے سرینگر جموں شاہراہ پر عام ٹریفک پر بندش کو نرم کرنیکا اعلان کیا ہے۔سرینگر اور اودہمپور کے درمیان13مئی سے بدھ کو عائد کی جانے والی بندشوں کو ہٹایا ہے ۔اس دوران عام ٹریفک پر کوی بھی پابندی نہیں ہوگی تاہم اتوار کو یہ بندشیں بدستور عائد رہیں گی۔حکومت کا کہنا ہے کہ  فورسز کانوائے کے چلتے عام لوگوں کو پیش آنے والی مشکلات کے باعث اس بات کا فیصلہ کیا گیا کہ 15مئی سے بدھ کو عائد کی جانے والی بندشیں اب نہیں رہیں گی۔حکومت کا کہنا ہے کہ سرکاری احکامات پر نظر ثانی کا عمل جاری ہے اور اس میں مزید بہتری لائی جائے گی۔شاہراہ پر یہ بندشیں لیتہ پورہ میں فدائین حملے کے بعد عائد کی گی تھیں، اور ہفتے میں اتوار اور بدھ کو بارہمولہ سے اودہمپور تک عام ٹیفک کے چلنے پر مکمل طور پر پابندی عائد کی گئی۔حکومت کا اصرار ہے کہ الیکشن ڈیوٹی پر مامور سیکورٹی فورسز کی ایک جگہ سے دوسری جگہ منتقلی اور شاہراہ پر فورسز کانوائیوں کی آوا جاہی کو ممکن بنانے کیلئے یکم اپریل سے پابندیاں عائد کی گئی تھیں۔ریاستی سرکار نے اتوار اور بدھ کو صبح 4بجے سے شام 5بجے تک عام ٹریفک پر مکمل طور پابندی عائد کر رکھی ہیں تاہم گذشتہ ہفتے سرینگر سے بارہمولہ تک بدھ کے روز بندشیں ہٹائی گئی تھیں۔اب آئندہ بدھ سے شاہراہ پر بندشیں نہیں رہیں گی تاہم اتوار کو بدستور بندشیں عائد رہیں گی جس کے بارے میں کہا گیا ہے کہ عنقریب اس میں بھی نرمی لائی جائے گی۔یہ امر قابل ذکر ہے کہ حکومت نے 2ماہ تک بندشیں رکھنے کا فیصلہ کیا تھا جن کا اطلاق 31مئی تک رہنے کا اعلان کیا گیا تھا۔