سرینگرمیں لینڈ پاس بکوں کی تقسیم کاری شروع

سری نگر//محکمہ مال میں عوامی خدمات کی فراہمی میں شفافیت کو فروغ دینے کے لیے ایک اصلاحات کے طور پر ضلع انتظامیہ سری نگر نے ہفتہ کو اراضی کے قانونی مالکان کو لینڈ پاس بک جاری کرنے کا عمل شروع کیا۔اس سلسلے میں ڈی سی آفس کمپلیکس سرینگرمیں ایک تقریب کا انعقاد کیا گیا جس میں صوبائی کمشنر کشمیر پی کے پولے نے ڈپٹی کمشنر سری نگر محمد اعجاز اسدکی موجودگی میں سرینگر کے جنوبی تحصیل کے اراضی مالکان کو لینڈ پاس بکس حوالے کیں۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے صوبائی کمشنر نے اس اقدام کو شفافیت اور گڈ گورننس کی جانب ایک تاریخی قدم قرار دیا۔انہوں نے مزید کہا کہ یہ لینڈ پاس بک اردو، انگریزی اور ہندی زبانوں میں لکھی گئی ہے تاکہ معلومات کے خلا کو پر کرنے اور لوگوں کی آمدن کے ریکارڈ تک آسانی سے رسائی کو فروغ دینے کے لیے خدمات کی فراہمی کو مزید بہتر بنایا جا سکے۔انہوں نے یہ بھی مشاہدہ کیا کہ لینڈ پاس بک بہت آسان شکل میں زمین کے مالکان کو ریونیو سے متعلق معلومات فراہم کرے گی، اس کے علاوہ مالیاتی اور دیگر اداروں کے سامنے پیش کرنے کے لیے ایک درست کاغذ کے طور پر کام کرے گی۔ ڈپٹی کمشنر سری نگر نے بھی اس موقع پر خطاب کیا اور اس اقدام کو خدمات کی فراہمی کو مزید بہتر بنانے، ریونیو ریکارڈ سسٹم میں شفافیت اور جوابدہی کو بڑھانے کے لیے ایک سنگ میل قرار دیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ "یہ مختلف فورمز پر مختلف شکایات، قانونی چارہ جوئی، تنازعات کے ازالے اور حوالہ جات کا ایک ذریعہ بنے گا۔" انہوں نے کہا کہ لینڈ پاس بک زمین کی ملکیت کا شناختی کارڈ ہے۔دریں اثناپانتہ چھوک، شالہ ٹینگ،خانیار، سری نگر نارتھ، چھانہ پورہ اور عیدگاہ میں بھی اسی طرح کی تقریبات منعقد کی گئیں جن کے دوران قانونی اراضی کے مالکان کو لینڈ پاس بکس جاری کی گئیں۔