سرکردہ صحافی واردو ادیب قاسم سجادرحمت حق

اننت ناگ//اردوصحافت سے وابستہ وادی کے سرکردہ صحافی ونوجوان صحافی ماجدجہانگیر کے والد اور روزنامہ شہاب کے ایڈیٹرو مالک قاسم سجادسوموارکو انتقال کرگئے۔اُن کی نماز جنازہ اڑھائی بجے ادا کی گئی جس کے بعد مرحوم کو آبائی قبرستان واقع سرنل بالا میں سپرد لحد کیا گیا ۔موصوف 75 برس کے تھے۔اہل خانہ کے مطابق گزشتہ2مہینے سے بزرگ صحافی کی صحت ناساز تھی ۔صحافتی، ادبی اور علمی حلقے قاسم سجاد کے اچانک جدا ہونے سے سخت صدمے میں ہیں۔خیال رہے کہ مرحوم قاسم سجادجموں وکشمیر ایڈیٹرس فورم کے ایگزیکٹو ممبر بھی تھے ۔انجمن اردوصحافت جموں وکشمیر ،جموں وکشمیر ایڈیٹرس فورم اوردیگرکئی صحافتی انجمنوں اورصحافیوںنے قاسم سجاد کے انتقال پرسخت صدمہ ظاہر کرتے ہوئے موصوف کی صحافتی خدمات کو خراج عقیدت پیش کیا۔صحافتی انجمنوںنے کہاکہ قاسم سجاد ایک کہنہ مشق صحافی وقلمکار ہونے کے ساتھ ساتھ ایک بہترین مقرر بھی تھے ۔مرحوم قاسم سجادکے آخری رسوم آبائی علاقہ اننت ناگ میں نجام دئے گئے اورسماج کے مختلف حلقوں وطبقوں سے وابستہ افرادبشمول صحافیوںنے نماز جنازہ میں حصہ لیا۔انجمن اردوصحافت جموں وکشمیر اورجموں وکشمیر ایڈیٹرس فورم نے جملہ سوگواراں بالخصوص مرحوم کے فرزند ماجدجہانگیر کے ساتھ ہمدردی ،یکجہتی اورتعزیت کااظہار کرتے ہوئے دعاکی کہ اللہ تعالیٰ مرحوم کے درجات کوبلند کرے اورسوگواراںکویہ صدمہ برداشت کرنے کی توفیق عطاکرے ۔ادھراپنی پارٹی صدر سید الطاف بخاری نے معروف اردو صحافی قاسم سجاد کے انتقال پر گہرے صدمے کا اظہار کیا ہے ۔انہوں نے سجاد کو سرکردہ اردو صحافی قرار دیا ۔ صحافت کے ذریعے اردو زبان کو فروغ دینے میں اُن کی خدمات کو ہمیشہ یاد رکھاجائے ، اُن کی وفات سے ایک ناقابل تلافی خلاء پیدا ہوا ہے۔ اننت ناگ ورکنگ جرنلسٹس کا ایک تعزیتی اجلاس صدرایس طارق کی صدارت میںمنعقد ہوا ۔جس میں مرحوم کی ایصال ثواب کیلئے دعا کی گئی ۔شرکا نے صحافت کے تئیں ان کی شاندار خدمات کو سراہا۔سی پی آئی ایم کے سینئر رہنما محمد یوسف تاریگامی نے سینئر صحافی قاسم سجاد کے انتقال پر گہرے صدمے کا اظہار کیا ہے۔انہوں نے سوگوار کنبے سے تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے مرحوم کی جنت نشینی کیلئے دعا کی ہے۔