سرکاری بینروں پر لال سنگھ اور بالی بھگت ابھی بھی وزیر …!

 جموں//ریاستی کابینہ میں پھیر بدل ہوئے آج چوتھا دن ہے جب کہ سابق وزیر لال سنگھ کو کابینہ سے برخاست ہوئے ہفتوں ہو گئے ہیں لیکن شہر کے تمام بڑے ہسپتالوں اور جموں پٹھانکوٹ شاہراہ پر لگے سرکاری بینروں کے مطابق چودھری لال سنگھ اور بالی بھگت ابھی بھی ریاستی کابینہ کے وزراء ہیں۔ ضوابط کے مطابق، جس دن بھی کوئی وزیر اپنے عہدہ سے دستبردار ہوتا ہے وزیر کی تصاویر اور پیغامات والے بورڈ اور بینر وغیرہ فوری طور پر ہٹا لئے جاتے ہیں۔ ایسے اشتہاری مواد کو بہت سے علاقوں سے ہٹایا گیا ہے ،تاہم جموں کے کئی مقامات پر بینر اور اشتہار ابھی بھی نصب کئے گئے ہیں۔جموں کے ہسپتالوں اور جموں کے میڈیکل کالج ،سُپر اسپیشلٹی ہسپتال ،گاندھی نگر ہسپتال میں ابھی بھی بڑے سائز کے بینر اور جھنڈے لگے ہوئے ہیں ،جو کہ اصولوں کی خلاف ورزی ہے۔ سابقہ وزیر صحت کو سرکار کی مختلف سکیموں اور پروگراوموں جیسے کہ سوچھ بھارت ابھیان، راشٹریہ بال سورکھشا کاریہ کرم وغیرہ کا پروپگنڈہ کرتے ہوئے دیکھا جاتا ہے۔ اسکے علاوہ سابقہ وزیر کو اپنے دور کے دوران آیور ویدک کلاج کی حصولیابیوں کو عام کرتے دیکھا جاتا ہے۔ اسی طرح سے سابقہ وزیر لال سنگھ کے پوسٹر بھی جموں ۔پٹھانکوٹ شاہراہ پربہت سے مقامات پر چسپاں ہیں۔اس سلسلہ میں ایس ایم جی ایس کے میڈیکل سپرانٹنڈنٹ ڈاکٹر راجکمار سانگڑہ نے کہا کہ یہ معاملہ متعلقہ حُکام کے ساتھ اُٹھایا جائے گا، تاکہ ان بینروں کو ہٹایا جا سکے۔ دریں اثنا نیشنل ہیلتھ مشن کے ایک سینئر افسر نے کہا کہ تمام ہیلتھ مراکز سے میٹیریل کو  ایک یا دو دنوں میںہٹایا جائے گا۔