سرنکوٹ میں دکان کاتنازعہ دوسرے روز بھی جاری رہا مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے پولیس نے آنسو گیس کا استعمال کیا

بختیار کاظمی

سرنکوٹ//سرنکوٹ قصبہ میں ایک دکان پر ہوا تنازعہ دوسرے روز بھی مسلسل جاری رہا تاہم جموں وکشمیر پولیس نے مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے آنسو گیس کا بھی استعمال کیا ۔دوسرے روز دکان کے حقیقی مالکان متنازعہ دکان میں زبردستی داخل ہو گئے۔ اتنے میں سرنکوٹ پولیس و نائب تحصیلدار سرنکوٹ مہ عملہ موقع پر پہنچے اور دکان مالکان کو دکان سے باہر آنے کو کہا کہ لیکن انھوں نے باہر جانے سے انکار کیا۔ پولیس دکان کے پچھلے حصے سے داخل ہوئی اور مالکان نے پولیس کی مذاحمت کی جس کے نتیجے میں پولیس نے ہجوم کو منتشر کرنے کے لئے آنسوں گیس کا استعمال کیا ۔مالکان نے سیول انتظامیہ و پولیس پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا ان کی ملی بھگت سے مذکورہ معاملہ بنایا گیا ہے تاہم انتظامیہ اور پولیس کا کہنا ہے کہ ان کے ہاتھ میں کچھ نہیں ہے ۔ انہوں نے کہاکہ دونوں فریقین کے درمیان تصادم آرائی ہونے کا اندیشہ تھا اگر سیول انتظامیہ اور پولیس چپ رہتی تو حالات قابو سے باہر ہو سکتے تھے۔ دکان مالک نے ساز و سامان باہر پھینک دیا تھا جس کے بعد انہوں نے کہاکہ سامان کو یا تو پولیس سٹیشن منتقل کیا جائے یا میونسپلٹی کے حوالے کر دیا جائے جبکہ سامان کو دکان میں رکھنے نہیں دیاجائے گا لیکن بات چیت کے دوران سامان کو پھر سے دکان میں رکھ کر سیل کردیا گیا ہے تاہم معاملہ جوں کا توں بنا ہوا ہے ۔