سردی زکام کی طرح کووِڈ- 19 ہمارے ساتھ لگا رہے گا:ڈاک

سرینگر//ڈاکٹرس ایسوسی ایشن کشمیر کاکہنا ہے کہ کووِڈہمارے ساتھ ہمیشہ لگارہے گا۔ایک بیان میں ایسوسی ایشن کے صدراڈاکٹر نثارالحسن نے کہا ،’’کووِڈ- 19کی عالمگیروباء کسی وقت ختم ہوگی ،لیکن اس کا جرثومہ یعنی وائرس انسانی آبادی میں گردش کرتارہے گا۔کووڈ- 19ایک اورانفیکشن بن جائے گاجو دیگربیماریوں میں شامل ہوگاجن کے ساتھ انسانوں نے جیناسیکھ لیا ہے۔انہوں نے کہا کہ ہم اپنی باقی ماندہ زندگی اس وائرس کے ساتھ جیئے گے،لیکن اس وائرس سے ہونی والی اموات ،بیماری اور سماجی طور الگ تھلگ رہنے میں کمی آئے گی۔وقت کے ساتھ کیسوںمیں کمی زیادتی ہوتی رہے گی اوریہاں وہاں یہ پھوٹ پڑتا رہے گا۔ڈاکٹرنثار نے کہا کہ کووِڈ-  19کے ہمیشہ ہمارے ساتھ لگے رہنے کی وجہ اس وائرس کی ہیت میں تبدیلیاں آنا ہے ۔ڈاکٹر نثار نے کہا کہ وقت گزرنے کے ساتھ کووِڈ سردی زکام جیسی بیماری ہوگی اورآخر کار یہ موسمی بیماری بن جائے گی۔انہوں نے کہا کہ 2009کے H1N1فلو ہمیں کووِڈ کے بارے میں ایک سراغ دے سکتاہے۔ H1N1عالمگیروباسولہ ماہ میں ختم ہوالیکن وائرس نابود نہیں ہوا۔اس کے بجائے یہ ایک موسمی بیماری میں بدل گیاجو سال بھر گردش میں رہتی ہے اورموسم سرما میں یہ جوبن پرہوتی ہے۔انہوں نے کہاکہ کووِڈابھی عالمگیروبابنا ہوا ہے کیوں کہ دنیابھر میںاس کی انفیکشن میں اضافہ ہورہا ہے اور بہت سے لوگ اب بھی اس کا شکار ہیں۔انہوں نے کہا کہ اس وبا کو ختم کرنے کیلئے ویکسنیشن اس وباء کوختم کرنے کیلئے ضروری ہے۔جب بہت زیادہ لوگ ویکسین لیں گے اوروہ بھی جلدی ہم اس وبا کاخاتمہ دیکھیں گے۔انہوں نے کہا کہ ویکسنیشن کے باوجودیہ وائرس موجود رہے گااور موسمیاتی فلو کی طرح اس کی وبا پھوٹتی رہے گی۔ڈاکٹر نثار نے کہا کہ ہمیں کووڈ- 19ویکسین کے بوسٹرشاٹ لینے کی ضرورت ہوگی۔