سب ڈویژن بانہال میں جنگلی جانوروںکی موجودگی سے خوف و دہشت

بانہال//سب ڈویژن بانہال کے بانہال اور کھڑی کے علاقوں میں انسانی بستیوں کے آس پاس جنگلی درندوں کی موجودگی سے عام لوگوں میں خوف و دہشت پھیلی ہوئی ہے اور پچھلے چند مہینے سے کالے ریچھوں کے کئی جھنڈ اپنے بچوں سمیت بانہال کے قرب وجوار کے علاقوں میں گھوم پھر رہے ہیں۔ جنگلی درندوں کی موجودگی کی وجہ سے کئی بستیوں میں صبح و شام عام  لوگوں کی نقل وحرکت متاثر ہوکر رہ جاتی یے اور مال مویشیوں کیلئے خطرہ لاحق ہوا ہے۔سب ڈویژن بانہال میں پچھلے چند مہینوں سے ریچھ کے حملوں میں ایک شخص کی موت واقع ہوئی ہے جبکہ چھ دیگر زخمی ہوئے ہیں۔ اس کے علاہ بانہال اور کھڑی کے علاقوں میں درجنوں مال مویشی جنگلی جانوروں کے حملوں میں ہلاک ہوئے ہیں اور یہ سلسلہ جاری ہے۔انچارج کنٹرول روم وائلڈ لائف بانہال نجم الدین نے کشمیر عظمی کو بتایا کہ کئی بستیوں کے نزدیک ریچھوں کو دور بھگانے کیلئے حکمت عملی سے کام لیا جارہا ہے اور اسے اکسانے یا ستانے سے مسائل پیا ہوسکتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ دو الگ الگ مقامات پر دو دو بچوں کے ساتھ موجود مادہ ریچھوں کو تنگ کرنے کی صورت میں وہ حملہ اور ہوسکتی ہیں اور لوگوں کو نقصان پہنچ سکتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ بستیوں کے نزدیک ریچھوں کو بے ہوش کرنے کیلئے ٹرنکولائزر بندوق بھی لائی گئی یے لیکن ابھی تک اس کا استعمال نہیں کیا گیا کیونکہ اس سے مادہ ریچھ خونخوار ہوکر حملہ اور ہوسکتی ہے۔ انہوں نے لوگوں سے اپیل کی ہے کہ وہ جنگلی درندوں ریچھ یا تیندوے کو دیکھنے کی صورت میں  احتیاط سے کام لیں ، راستہ کاٹ لیں ، شور شرابہ نہ کریں اور ناہی پتھرائو کریں۔ انہوں نے کہا کہ محکمہ وائلڈ لائف نے لوگوں میں پٹاخے تقسیم کئے ہیں اور جنگلی جانوروں کی موجودگی کی صورت میں وہ پٹاخوں کا مناسب استعمال کرکے انہیں بستیوں سے دور بھگائیں ۔ انہوں لوگوں سے اپیل کی کہ جنگلی جانوروں کی موجودگی کی صورت میں ہی پٹاخے پھوڑیں اور بلاوجہ کے پٹاخے چھوڑنے سے جنگلی جانوروں میں ڈر ختم ہوجاتا ہے۔