سال قبل محکمہ تعمیرات عامہ نے زمین لی | اراضی مالکان معاوضہ سے محروم

گول//گول میں مختلف مقامات پر سال سے سرکار سڑکوں کا جال بچھانے کے لئے لوگوں کی اراضی کاٹ کے رکھی لیکن نہ ہی لوگوں کو ابھی تک معاوضہ ملا اور نہ ہی یہ روڈ قابل آمد و رفت ہیں جس وجہ سے جہاں ان سڑکوں پر چلنے والوں کو دقتوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ وہیں اراضی مالکان کے باغات، مکانات اور فصلوں کا بھی شدید نقصان ہوا ہے جس کی بھر پائی کے لئے سرکا ر نے کوئی قدم نہیں اُٹھایا ۔ سب ڈویژن گول کے سنگلدان نیابت میں سرنڈا گھمیری روڈ پر سات سال قبل محکمہ تعمیرات عامہ نے کٹائی کی لیکن اُس کے بعد اس کی طرف نظر نہیں دی ۔یہ روڈ ٹھٹھارکہ کو گول سے ملاتی ہے جبکہ اس کے ملحقہ جات علاقوں کو بھی اس روڈ سے قریباً چھ سے سات کلومیٹر سفر آسان ہوتا ہے لیکن سرکار نے اس روڈ کی طرف کوئی توجہ نہیں دی بالآخر اراضی مالکان نے اس روڈ کو بند کر دیا ۔ کشمیر عظمیٰ کے ساتھ بات کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ سات سال قبل محکمہ تعمیرات عامہ نے اس رو ڈکی کٹائی کی اور اس گھمیری اور دلواہ کو سرنڈا و ٹھٹھارکہ کے ساتھ ملایا اور تب سے لے کر آج تک یہاں محکمہ کا کوئی آدمی دکھائی نہیں دیا ۔ انہوں نے کہا کہ اراضی مالکان کو نہ ہی معاوضہ دیا اور نہ ہی سڑک کو قابل آمد و رفت بنایا ،اس کی دیواریں نہیں ، نالیاں نہیں تعمیر ہوئیں جس کی وجہ سے باقی اراضی اور رہائشی مکانات کو بھی کافی نقصان پہنچا ہے ۔ اراضی مالکان نے کہا کہ اگر چہ اس سلسلے میں محکمہ سے بھی رابطہ قائم کیا تھا لیکن اس کی کوئی فائل نہیں بنائی گئی ۔