زچہ و بچہ ہسپتال کنگن 15برسوں سے تشنۂ تکمیل

کنگن// کنگن میں زچہ وبچہ ہسپتال گذشتہ پندرہ برس سے تشنۂ تکمیل ہے جس کی وجہ سے کنگن اور مضافاتی علاقوں کی خواتین کو سرینگر کا رخ کرنا پڑتا ہے۔100 بیڈ پر مشتمل اس ہسپتال کا سنگ بنیاد 2005میںرکھا گیا اور اس وقت کی سرکار نے عوام کو یقین دلایا تھا کہ تین برسوں کے اندراندرہسپتال پر کام مکمل ہوگا ۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ کئی بار ضلع انتظامیہ اور سرکار سے اس سلسلے میں اقدامات کی اپیل کی گئی لیکن کوئی کارروائی نہیں کی گئی۔ 15برس قبل 27.55کروڑ روپئے اس ہسپتال کی تعمیر کے لئے مختص کئے گئے تھے لیکن آج ٹھیکیدار کا کہنا ہے کہ فنڈس کی عدم دستیابی کے باعث کام رکا پڑا ہے۔ علاقے کے لوگوں نے لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا سے مطالبہ کیا کہ اسپتال کو قابل استعمال بنانے کیلئے سرعت سے کام شروع کیا جائے تاکہ لوگوں کو مزید مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے ۔ چیف میڈکل افسر گاندربل ڈاکٹرمعراج الدین صوفی نے اس ضمن میں کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ فنڈس کی عدم دستیابی کی وجہ سے اسپتال تعمیراتی کام رکا ہوا ہے۔