زوجیلا پر بھاری برفانی توداگرآیا،5گاڑیاں دب گئیں ۔6افراد کو بچا لیا گیا،محکمہ آفات سماوی کی طرف سے 4اضلاع میں تودے گرنے کی وارننگ

غلام نبی رینہ
کنگن// کم از کم 5گاڑیوں کے ڈرائیوروں اور مسافروں سمیت چھ افراد اس وقت معجزانہ طور پر بچ گئے جب وہ اتوار کی دوپہر سری نگر-لیہہ شاہراہ پر زوجیلا پاس پر بھاری برفانی تودے کی زد میں آ گئے۔سپرنٹنڈنٹ آف پولیس (ایس پی)، کرگل عنایت علی چودھری نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ کم از کم 5 گاڑیاں بشمول چار ٹرک اور ایک پرائیویٹ گاڑی زوجیلا پاس پر شیطانی نالہ کے قریب برفانی تودے کی زد میں آگئیں۔ تاہم ان کا کہنا تھا کہ ان گاڑیوں کے تمام مسافر اور ڈرائیور محفوظ طریقے سے نکالے گئے۔انہوں نے کہا کہ گاڑیوں میں سوار تمام 6 ڈرائیوروں اور مسافروں کوبیکن اور مقامی پولیس نے بچا لیا۔ ڈرائیور سمیت کچھ افراد کو معمولی چوٹیں آئیں اور انہیں علاج کے لیے سب ڈسٹرکٹ اسپتال ریفر کر دیا گیا۔ ایس ایس پی نے مزید بتایا کہ یہ واقعہ اتوار دوپہر بارہ بجے شیطانی نالہ منی مرگ دراس کے مقام پر پیش آیا جب گاڑیاںسونہ مرگ سے کرگل کی طرف جارہے تھیں۔ معلوم ہوا ہے کہ شیطانی نالہ اور زوجیلا کے کئی مقامات پر ابھی بھی چالیس سے پچاس فٹ برف کے پہاڑ موجودہیں۔سہ پہر بعد گاڑیوں کو باہر نکالنے کی کارروائی اس وقت روک دی گئی جن زوجیلاپر ہلکی برف باری شروع ہوئی۔ سڑک کو صاف کرنے کے لیے مشینری پہنچائی گئی تاہم برفباری کی وجہ سے اس میں مشکلات پیش آئیں۔دریں اثناء چار اضلاع میں برفانی تودے گرنے کی وارننگ جاری کی گئی ہے۔جموں و کشمیر ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی (جے کے ڈی ایم اے) نے “کم خطرے” کی سطح کے ساتھ اگلے 24 گھنٹوں کے دوران بانڈی پورہ، کپواڑہ، ڈوڈہ اور کشتواڑ اضلاع کے بالائی علاقوں میں برفانی تودے گرنے کا امکان ظاہر کیا گیا ہے۔ان علاقوں میں رہنے والے لوگوں کو مشورہ دیاگیاکہ وہ احتیاطی تدابیر اختیار کریں اور اگلے احکامات تک برفانی تودے کے شکار علاقوں میں جانے سے گریز کریں۔