زرعی یونیورسٹی کے طلباء بھی خوفزدہ

سرینگر//// زرعی یونیورسٹی کشمیرمیں زیر تعلیم درجنوں طلاب،جوخصوصی تربیت کیلئے بیرون ریاست روانہ ہوئے تھے،تاہم ان کے اہل خانہ کے مطابق مذکورہ طالب علموں کی سلامتی سے متعلق خدشات لاحق ہیں اور انہیں واپس کشمیر لایا جانا چاہئے۔ زرعی یونیورسٹی کشمیر سے قریب20طلاب خصوصی تربیت کیلئے ہریانہ اور فرید آباد روانہ ہوئے تھے،جہاں انہوں نے اگر چہ خصوصی تربیت میں بھی شرکت کی ،جس کے بعد یہ طالب علم ہریانہ میں جمع ہوئے،جہاں سے انہیں پونے مہاراشٹرا روانہ ہونا تھا۔ان طالب علموں کے اہل خانہ کے مطابق تاہم بیرون ریاستوں میں کشمیر مخالف ماحول پیدا ہوا ہے،اس لئے انہیں واپس لانے کیلئے اقدام کئے جانے چاہیں۔انہوں نے کہا کہ ہریانہ میں ان کے بچے بھی خوف زدہ ہیں اور وہ ماحول سے بھی واقف ہیں،اور وہ فی الوقت پونے نہیں جانا چاہتے،تاہم یونیورسٹی حکام اس سلسلے میں کوئی بھی قدم نہیں اٹھا رہے ہیں۔ان طالب علموں کے والدین نے اپنے بچوں کی سلامتی کے حوالے سے خدشات کا اظہار کرتے ہوئے مطالبہ کیا کہ انہیں فوری طور پر کشمیر لانے کیلئے اقدامات کئے جانے چاہیں۔اس حوالے سے اگر چہ زرعی یونیورسٹی کشمیر سے رابطہ قائم کرنے کی کوشش کی گئی تاہم رابطہ قائم نہ ہوسکا۔