زراعت کے عارضی ملازمین کا مظاہرہ

سرینگر// محکمہ زراعت کے عارضی ملازمین نے مستقلی کا مطالبہ کرتے ہوئے انکی ملازمت میں ایس آر ائو 520کو نفاذ میں لانے کیلئے احتجاجی مظاہرے کئے۔ پرتاپ پارک لالچوک میں محکمہ زراعت کے کیجول لیبروں نے منگل کو احتجاج کرتے ہوئے اپنے مطالبے کے حق میں نعرہ بازی کی۔احتجاجی مظاہرین نے ہاتھوں میں بینر اور کتبے اٹھا رکھے تھے اور سرکاری پالیسیوں کے خلاف نعرہ بازی کی۔اگریکلچر کیجول لیبرڈیلی ریٹیڈ ورکرس ایسو سی ایشن کے جھنڈے تلے احتجاج کرتے ہوئے مظاہرین نے کہا کہ وہ طویل عرصے سے مستقلی کا مطالبہ کرتے ہیں تاہم مطالبہ کو نظر انداز کیا جا رہا ہے۔اس موقعہ پر ایسو سی ایشن کے صدر حاجی جہانگیر احمد نے کہا کہ وہ گزشتہ کئی برسوں سے بر سر احتجاج ہیںاور یہ مطالبہ کر رہے ہیں کہ انکے ماہانہ مشاہروں کو واگزار کرنے کے علاوہ فوری طور پر ایس آر ائو520کا نفاذ عمل میں لایا جائے۔ انہوں نے کہا ’’ہمارے دستاویزات عرصہ دراز سے سیکریٹریٹ میں گرد آلودہ ہیںاور ہمیں کہا جا رہا ہے کہ120 تنخواہوں کی رسیدیں پیش کریں جو کہ ایس آر ائو520میں درج نہیں ہے۔‘ مظاہرے میں شامل ایک عارضی ملازم نے کہا کہ وہ گزشتہ11برسوں سے محکمہ زراعت میں کیجول لیبر کی حیثیت سے کام کررہا ہے اور کم تنخواہ کی وجہ سے کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ2018سے انکی تنخواہ کو واگزار نہیں کیا گیااور وہ اب بچوں کے ٹیوشن فیس ادا کرنے کی حالت میں نہیں ہے۔ مظاہرین نے کہا کہ وہ کسی بھی نا انصافی کو قبول نہیں کریں گے۔