ریونیو معاملات کو نمٹانے کیلئے ہمہ جہت کوششیں کرنے کی ضرورت : ویری

 جموں//مال ، حج و اوقاف کے وزیر عبدالرحمان ویری نے کہا ہے کہ ریونیو سے جڑے معاملات کو وقت پر حل کرنے کیلئے جامع کوششیں کی جانی چاہئیں کیونکہ لوگوں کو محکمہ سے کافی توقعات وابستہ ہے ۔ان باتوں کا اظہار وزیر موصوف نے یہاں جموں صوبے سے تعلق رکھنے والے ریونیو افسروں کی ایک کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔فائنانشل کمشنر مال لوکیشن جہا ، کمشنر سیکرٹری مال شاہد عنایت اللہ ، ڈویژنل کمشنر جموں ہمنت شرما کے علاوہ کئی دیگر افسران نے کانفرنس میں شرکت کی۔اس موقعہ پر جانکاری دی گئی کہ جموں صوبہ 10اضلاع، 33سب ڈویژنل ، 1018تحاصیل ،273نیابتوں ، 824پٹوار حلقوں اور 3773ریونیو دیہات پر مشتمل ہیں ۔علاوہ ازیں سال 2017-18کے دوران چار سب ڈویژنس کو اے ڈی سی کے طور پر بڑھاوا دیا گیا۔کانفرنس کے دوران مختلف اضلاع میں مال محکمہ کی سرگرمیوں کو تفصیل سے زیر بحث لایا گیا۔ویری نے متعلقہ افسروں سے کہا کہ وہ التوا میں پڑے معاملات کو حل کرنے کیلئے ایک اختراعی لائحہ عمل اختیار کریں۔انہوں نے اراضی ریکارڈ س کی جدید کاری کے پروگرام میں تیزی لانے کی ضرورت پر زور دیا۔ انہیں بتایا گیا کہ سینٹرل ریکارڈ روم کی سکیننگ کا 95فیصد کام مکمل کیا جاچکا ہے ۔صوبائی کمشنر نے وزیر کو جموں صوبہ میں مختلف اہم پروجیکٹوں کیلئے حصول اراضی سے جڑے معاملات کے بارے میں جانکاری دی ۔وزیر نے ضلع ترقیاتی کمشنروں سے کہا کہ وہ اراضی مالکان کو معاوضے کی جلد ادائیگی کو یقینی بنائیں۔ویری نے مال محکمہ کے بنیادی ڈھانچے کو بڑھاوا دینے کیلئے حکومتی اقدامات کا ذکر کیا۔