ریل سروس مسلسل بند رکھنے کے خلاف بانہال میں احتجاج

بانہال // منگل کے روز ریلوے سٹیشن بانہال پر کانگریس کی طرف سے بانہال۔بارہ مولہ ریل سروس کو مسلسل بند رکھنے کے خلاف سینکڑوں لوگوں نے احتجاجی مظاہرے کئے۔ مظاہرہ کی قیادت سابق ممبر اسمبلی بانہال وقار رسول کررہے تھے۔ بارہمولہ بانہال ریل سروس کو فوری طور بحال کرنے کی مانگ کیلئے کئے احتجاجی مظاہرے میں سینکڑوں کی تعداد میں مقامی دکانداروں،ٹیکسی ڈرائیوروں اور کانگریس ورکروں کے علاؤہ میونسپل چیئرمین بانہال فاروق احمد وانی اور ضلع ترقیاتی کونسلر رامسو بشیر احمد نائیک نے بھی شرکت کی۔ احتجاجی مظاہرین نے انتظامیہ اور شمالی ریلوے کے خلاف نعرے لگائے اور ریل سروس بحالی کے حق میں بینر اٹھا رکھے تھے۔ اس موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے وقار رسول اور ضلع دیہی ترقیاتی کونسل کے منتخب کونسلر رامسو بشیر احمد نائیک نے کہا کہ شمالی ریلوے اورجموںوکشمیر انتظامیہ کی طرف سے ریل سروس کو بحال کرنے میں کی جارہی تاخیر کی وجہ سے ہزاروں کی تعداد میں عام لوگوں ، مریضوں ، سرکاری ملازموں اور کشمیر کے تعلیمی اداروں میں زیر تعلیم بچوں کو سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے جبکہ لاک ڈاؤن کے نام پر باقی سب کچھ معمول پر آگیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ریل سروسز معطل ہونے کی وجہ سے بانہال اور بارہمولہ کے درمیاں ہزاروں ڈرائیور اور دکاندار بیروزگار ہوگئے ہیں اور انہیں معاوضہ ادا کرنے پر سرکار کو غور کرنا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ کووڈانیس لاک ڈاؤن کے بعد مسافر گاڑیوں نے بانہال اور کشمیر کے درمیان مسافر کرایہ میں بے تحاشہ اضافہ کررکھا ہے جو عام مسافر کی پہنچ سے باہر ہوگیا یے اور اب چالیس روپئے کے آنے جانے کا سفر ہزاروں روپئے میں طے ہوتا ہے۔ انہوں نے ریلوے ، مرکزی اور ریاستی حکومتوں سے اپیل کی ہے کہ وہ ریل سروس کو جلد از جلد بحال کرکے لاکھوں لوگوں کو راحت پہنچائیں۔