ریاست کی ہمہ جہت ترقی کیلئے آپسی بھائی چارے کی مضبوطی ناگزیر :فاروق عبداللہ

 جموں//گذشتہ روز جموںو کشمیرنیشنل کانفرنس میں متعددسابق بیوروکریٹوں نے شمولیت کی۔اس سلسلے میں  یہاں شیر کشمیر بھون میں تقریب کااہتمام کیاگیاتھاجہاں جموں یونیورسٹی کے سابق وائس چانسلر پروفیسر آر آر شرما، سابق ناظم اطلاعات نریندر سنگھ اور سابق ایڈیشنل کمشنر و ریٹائرڈ آئی اے ایس آفیسر محمد سلیم کی نیشنل کانفرنس میں شمولیت اختیارکی ۔فاروق عبداللہ نے کہا کہ لوگوں کو مذہب کی بنیادوں پر تقسیم کرنا ملک کے لئے سب سے بڑا چیلنج ہے اور اس چیلنج کا مقابلہ فرقہ وارانہ ہم آہنگی کی قدروں کو مضبوط بناکر اور اور آپسی بھائی چارے کو قائم و دائم رکھ کر ہی کیا جاسکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ریاست کی ترقی اور خوشحالی کے لئے امن کا ہونا بہت ضروری ہے اور جموں کے حالات کا سیدھے طور وادی پر اثر پڑتا ہے۔انہوں نے این سی کے سبھی سطح کے کارکنوں سے کہا کہ وہ ریاست کی صدیوں پرانے آپسی بھائی چارے اور فرقہ وارانہ ہم آہنگی کو برقرار رکھنے کے لئے یک جٹ ہوکر کام کریں ۔ این سی میں شامل ہونے والی شخصیات کا پرجوش خیر مقدم کرتے ہوئے صوبائی صدر دیوندر سنگھ رانا نے کہا کہ پروفیسر آر آرشرما،نریندر سنگھ اور محمد سلیم نے اپنی سرکاری نوکریوں کے دوران نمایاں خدمات انجام دی ہیں۔رانا نے امیدظاہر کی کہ ان شخصیات کے این سی میں شامل ہونے سے پارٹی مزید مضبوط ہوگی ۔ نریندر سنگھ نے اس موقعہ پر این سی پر اپنے اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے کہا یہ وہی جماعت نے جس کے قد آور ہنمائوں نے ریاست کی ترقی و خوشحالی اور آپسی بھائی چارے کی قدروں کئی آبیاری کرکے ترقی اور خوشحالی کی ایک نئی منزل پر گامزن کیا ہے۔اس موقعہ پر ڈاکٹر شیخ مصطفیٰ کمال ، سرجیت سنگھ سلاتھیہ،مبارک گل،رتن لال گپتا،ٹھاکر کشمیرا  سنگھ،بابو رام،اعجاز جان،شیخ بشیر احمد ،برج موہن شرما،حاجی محمد حسین،ماسٹر نور حسین اور دیگران شامل تھے۔