ریاست میں بڑے پروجیکٹو ں پر کام سرنوشروع کیاجائے: نعیم اختر

 سرینگر//پیپلزڈیموکریٹک پارٹی نے مرکزی حکومت پر جموں وکشمیر میں رابطوں کے بڑے پروجیکٹوں پر کام میں تیزی لانے پرزوردیتے ہوئے کہا کہ اکثر اِن پروجیکٹوں پر کام لٹکاہوا ہے اور کئی اہم منصوبوں کو حکومت کی طرف سے کوئی وجہ بتائے بغیر ترک کیاگیاہے۔ان اطلاعات کہ وزیراعظم اس ماہ ریاست کادورہ کرکے کئی اہم ترقیاتی منصوبوں کاسنگ بنیاد رکھیں گے،سابق کابینہ وزیراور پی ڈی پی لیڈر نعیم اختر نے ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ جموں کشمیرمیں نئے منصوبوں کو شروع کرنا ایک خوش آئندقدم ہے ، حکومت ہند کو اس بات کی طرف بھی دھیان دیناچاہیے کہ ماضی میں اُ س نے یہاں ریاست میں جن منصوبوں کو شروع کیاتھا وہ کیوں معینہ مدت کے اندر مکمل نہیں ہوپارہے ہیں ۔نعیم اختر نے کہا کہ زوجیلا ٹنل پر کام شروع ہی نہیں ہوا،زیڈ موڈ ٹنل پر کام مکمل بند کیا گیا ہے ۔ انہوں نے مزید کیا کہ نئی جواہر ٹنل پر کام سست رفتاری سے جاری ہے اور اب تک کئی بار اس کی معینہ مدت تکمیل چھوٹ گئی ۔ رنگ روڈ پروجیکٹ بھی لٹکاہوا ہے ،معاوضہ کی رقم بھی دستیاب نہیں ہے اور اراضی کی حصولی کا عمل مکمل نہیں ہوا ہے ۔نئے منصوبوں کااعلان خوش آئند ہے ،لیکن موجودہ منصوبوں کی صورتحال پر بھی دھیان دینے کی ضرورت ہے ۔نعیم اختر نے کہا کہ سابق مخلوط عوامی سرکار کے دوران ریاست میں مرکزی اسکیموں پر کام سرعت سے ہورہا تھا جس کی مثال سرینگر قاضی گنڈ شاہراہ اور چننئی ناشری ٹنل ہے۔ان منصوبوں کو ترجیحی بنیاد پر لیاگیاکیونکہ ریاستی حکومت ان کی مسلسل پیروی کررہی تھیں۔ انہوں نے وائلوں ٹنل پر کام شروع نہ کئے جانے پر مایوسی کااظہار کیا جبکہ پونچھ جموں سڑک کو چار گلیاروں والی سڑک میں بدلنے کو ایک خواب قراردیا ۔ انہوں نے گورنر پرزوردیا کہ وہ ان منصوبوں کے بارے میں مرکز سے بات چیت کریں تاکہ ان پر کام جلد سے جلد شروع ہو۔