ریاست میں انتشاری قیاس آرائیوں کو ختم کریں:سجاد لون

سرینگر// بڑے پیمانے پر گرفتاریوں اور فورسز کی تعیناتی پر سوال کھڑے کرتے ہوئے پیپلز کانفرنس نے کہاہے کہ  وادی کشمیر میں ایک خوفناک صورتحال پیدا ہوئی ہے ۔پیپلز کانفرنس کے چیئرمین سجاد غنی لون کی صدارت میں منعقد ہونے والے پارٹی کی قیادت کے خصوصی ہنگامی اجلاس کے بعد میڈیا سے خطاب کرتے ہوئے پارٹی کے جنرل سکریٹری مولوی عمران رضا انصاری نے کہا کہ ریاست میں بے امنی، خوف اور خدشات کے چھائے ماحول پر پارٹی کو سخت تشویش ہے ۔انہوں نے مرکزی حکومت اور گورنر انتظامیہ سے یہ مطالبہ کیا کہ وہ ماحول صاف کریں اور ریاست میںانتشار پیدا کرنے والی قیاس آرائیوں کو ختم کریں۔ پارٹی کے سینئر نائب صدر نے کہا کہ پارٹی اجلاس نے اس بات پر بھی آگاہی ظاہر کی کہ مختلف سرکاری محکموں کے جاری کردہ چند احکامات کی وجہ سے افراتفری میں کس قدر اضافہ ہوا ہے، جس سے لوگ متنبہ اور خوفزدہ ہیں۔پارٹی کے جنرل سکریٹری مولوی عمران رضا انصاری نے مزید کہا کہ پارٹی نے اس بات پہ بھی زور دیا ہے کہ آرٹیکل 35-A اور آرٹیکل 370 دونوں مقدس دفعات ہیں اور ریاست کی خصوصی حیثیت کے ساتھ چھیڑ چھاڑ کی کسی بھی قسم کی کوشش ناقابل برداشت اور ناقابل قبول ہوگی۔ پیپلز کانفرنس نے نہ صرف یہ کہ ریاست کی خصوصی حیثیت کو مزید ریشہ دوانیوں اور سازشوں سے محفوظ رکھنے کے لئے  لڑنے کے اپنے عزم کا اعادہ کیا بلکہ ریاست کو اس کی اصل حیثیت پر بحال کرنے کی کوششیں جاری رکھنے کا بھی ارادہ ظاہر کیا۔ حکام کو چاہیے کہ وہ تازہ تعیناتی کے پیچھے وجوہات کی وضاحت کریں اور لوگوں کو اندھیرے میں نہ رکھیں۔