ریاستی قانون سازیہ میں بہت جلد نیشنل اِی ۔ودھان اپیلی کیشن قائم ہوگی

جموں//قانون ساز کونسل کے چیئرمین حاجی عنائت علی اور قانون ساز اسمبلی کے سپیکر ڈاکٹر نرمل سنگھ نے قانون ساز اسمبلی کے سینٹرل ہال میں دو روزہ نیشنل اِی ۔ودھان اپیلی کیشن سے متعلق تربیتی ورکشاپ کا افتتاح کیا۔ورکشاپ کا اہتمام ریاستی قانون سازیہ نے مرکزی وزارت برائے پارلیمانی امور کے اشتراک سے کیا ہے تا کہ کونسل اور اسمبلی میں مکمل طور بغیر کاغذ کے کام کاج کو فروغ دیا جاسکے۔مرکزی پارلیمانی امور کے سیکرٹری ایس این ترپیاٹھی افتتاحی تقریب پر موجود تھے۔اس موقعہ پر نیوا کوارڈی نیٹر ارپت تیاگی اور ڈاٹا بیس ایڈمنسٹریٹر سمیر ورثانی نے پاور پوائنٹ پریذنٹیشن کے ذریعے نیشنل اِی۔ ودھان اپیلی کیشن کے مقاصد اور اہمیت کو اُجاگر کیا۔اس کے علاوہ ملک کی مختلف ریاستوں میں قائم اسمبلیوں میں اس پروجیکٹ کی عمل آوری پر تیار کی گئی ویڈیو ڈاکیومنٹری بھی پیش کی گئی۔اس موقعہ پر بتایا گیا کہ نیوا ایک مشن موڈ پروجیکٹ ہے جس کی بدولت ریاستی قانون سازیہ کی کارکردگی ڈیجیٹائز ہونے کے علاوہ بغیر کاغذ کام کرے گی۔مرکزی وزارت برائے پارلیمانی امور اِی ۔ودھان ایم ایم پی کی عمل آوری کے لئے نوڈل وزارت قائم کی گئی ہے اور اس وزارت کو ملک کی31 ریاستوں /مرکزی زیر انتظام ریاستوں کے لئے نیشنل اِی۔ ودھان اپیلی کیشن کو فروغ دینے کے لئے تمام لازمی اقدامات کرنے کے لئے اختیار دیا گیا ہے۔مرکزی پارلیمانی امور کے سیکرٹری ایس این ترپیاٹھی نے نیشنل اِی ۔ ودھان اپیلی کیشن کی اہمیت پر روشنی ڈالی۔ ریاستی اسمبلی کے سپیکر ڈاکٹر نرمل سنگھ نے مِشن کے تحت اسمبلی اور کونسل کی آئی ٹی شاخوں کی طرف سے دونوں ایوانوں کے ریکارڈ کو ڈیجیٹائز کرنے کے سلسلے میں اُٹھائے گئے اقدامات کی سراہنا کی۔ورکشاپ میں دیگر لوگوں کے علاوہ قانون ساز کونسل کے سیکرٹری مظفر احمد وانی، سیکرٹری اسمبلی اچل سیٹھی، مرکزی پارلیمانی امور کے جوائنٹ سیکرٹری ستیہ پرکاش کے علاوہ کونسل اور اسمبلی سیکرٹریٹ کے افسران نے بھی شرکت کی۔اس سے قبل ڈائریکٹر ٹیکنیکل راجیش جموال، ڈپٹی سیکرٹری محمد یوسف بٹ( نوڈل افسر)، انڈر سیکرٹری قاضی مشتاق احمد( نوڈل افسر)، انچارج آئی ٹی برانچ وشال شرما نے ڈیجیٹل انڈیا مشن کے تحت ریکارڈ کی ڈیجیٹائز کے عمل پر تفصیلی پریذینٹیشن پیش کی۔