رہبر تعلیم ٹیچرز فورم کی ریاست گیر احتجاجی کال مؤخر

جموں// جموں کشمیر رہبر تعلیم ٹیچرز فورم کی طرف سے25 اپریل کو ٹیچرگریڈ ٹو اور بند پڑی تنخواہوں کے حوالے سے دی گئی ریاست گیر احتجاجی کال کو فورم نے اعلیٰ حکام کی یقین دہانی کے بعد فی الحال موخر کر دیا ہے ۔یہاں فورم میڈیا سیل کی طرف سے جاری ایک پریس بیان کے مطابق 20 اپریل کو فورم چیئرمین فاروق احمد تانترے نے سرینگر میں منعقدہ فورم کے ایک اجلاس میں رہبر تعلیم سے ٹیچر گریڈ ٹو میں منتقل کر نے کے عمل میں کی جا رہی تاخیر اور بند پڑی تنخواہوں کے حوالے سے ریاست گیر احتجاج کا اعلان کیا تھا ۔تاہم اس بات کا اعلی حکام متعلقہ محکمہ کے افسر ان کی طرف سے سنجیدہ نوٹس لئے جانے کے بعد ناظم تعلیم کشمیر محمد یونس ملک نے اس سلسلے میں فورم کے ساتھ ایک تفصیلی میٹنگ منعقد کی – اس موقع پر انہوں نے فورم قیادت کو یقین دہانی کرائی کہ متعلقہ محکمہ اور گونر انتظامیہ کی طرف سے اس عمل کو فوری طور پر مکمل کر نے کے لئے متعلقہ آفسر ان کو سخت ہدایات دی گئی ہیں۔ انہوں نے کہا ہے کہ تمام باقی بچے اساتذہ کو ٹیچر گریڈ ٹو میں لانے کے لئے کچھ وقت درکار ہے جس پر زور و شور سے کام چل رہا ہے – انہوں نے کہا کہ گریجویٹ ،انڈر گریجویٹ اور پانچ سالہ مدت پوری کر نے والے تمام اساتذہ کو اس زمرے میں لایا جا رہا ہے۔انہوں نے کیا کہ صوبائی کمیٹی تک فائلوں کو پہنچانے کے لئے تمام زونل اور چیف ایجوکیشن آفسر ان کو ہدایت دی گئی ہے اور اس کام میں مزید سرت لائی جا رہی ہے۔ انہوں نے مزید یقین دہانی کرائی کہ دربار مو سرینگر میں کھلنے تک تمام فائلوں کو مکمل کرنے کی کوششیں زور و شور سے شروع کر دی گئی ہیں اور اس بارے میں اساتذہ کو گھبرانے کی ضرورت نہیں ہے۔ناظم تعلیم نے فورم وفد کو مزید بتایا کہ ہیڈ ٹیچرز کا مسئلہ بھی حل کیا جا رہا ہے جس میں صوبہ کشمیر میں ایک ہزار کے قریب آسامیاں پڑی ہوئی ہیں جبکہ دیگران  کے لئے انتظام کیا جا رہا ہے اور بہت جلد یہ معاملہ بھی حل ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ محکمہ اس کوشش میں لگا ہوا ہے کہ تمام اساتذہ بشمول جن کی پانچ سالہ مدت پوری ہو چکی ہے انہیں ایک ساتھ ہی ٹیچر گریڈ ٹو کے آڈر فراہم کئے جائیں گے محکمہ کو اس کے لئے سخت ہدایات ملی ہیں اور متعلقہ آفسر ان اس عمل میں لگے ہوئے ہیں۔ بند پڑی تنخواوں کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ محکمہ دربار مو منتقل ہونے تک تمام بقایا جات کو واگذار کرنے کی کوشش کر رہا ہے اور امید ہے کہ اس وقت تک تمام بقایا جات واگذار  کئے جائیں گے۔ ناظم تعلیم کے علاوہ تمام متعلقہ آفسر ان بھی میٹنگ میں موجود تھے جبکہ فورم کی طرف سے فورم چیئرمین کے علاوہ سرپرست اعلیٰ بشیر احمد ڈار دیگر سٹیٹ ایگزیکٹیو ممبران اور ضلع صدور موجود تھے ۔اس یقین دہانی کے بعد فورم نے فی الحال سرینگر میں دربار کھلنے تک 25 اپریل کو دی گئی ریاست گیر احتجاجی کال کو فی الحال موخرکردیا  ہے۔