روہنگیا پناہ گزینوں کو ملک بدر کرنے کا عمل شروع | صوبائی کمشنر نے ہولڈنگ سینٹر میں سہولیات کا جائزہ لیا

 جموں//غیر قانونی پناہ گزینوں کے خلاف حالیہ مہم میں حراست میں لئے گئے150روہنگیا پناہ گزینوں کو اپنے وطن واپس بھیجنے کا عمل شروع کیا گیا ہے ۔ان باتوں کا انکشاف ڈویژنل کمشنر جموں ڈاکٹر راگھو لنگرکے ہیرا نگر میں ان نظربندوں کیلئے قائم کئے گئے ہولڈنگ سینٹر کے دورے کے دوران کیاگیا ۔صوبائی کمشنر نے ہولڈنگ سنٹر میں موجود افراد کو فراہم کی جانے والی سہولیات کا جائزہ لیا گیا۔ انچارج ہولڈنگ سنٹر نے ڈویژنل کمشنر کونظربندوں کی حیثیت اوران کو فراہم کی جانے والی سہولیات سے آگاہ کیا جس میں بین الیاس ، ٹیلیفون / انٹرویو کی سہولت ، طبی نگہداشت اور تفریح کی سہولیات شامل ہیں۔انہوں نے صوبائی کمشنر کو آگاہ کیا کہ ہولڈنگ سینٹر میں چوبیس گھنٹے سیکورٹی کا انتظام موجود ہے اور پینے کے صاف پانی ، جنریٹر کے ساتھ بجلی ، مناسب صفائی / نکاسی آب کا نظام ، مناسب رہائش جیسے انسانی وقار کے مطابق زندگی کے معیار کو برقرار رکھنے کے لئے تمام ضروری سہولیات موجود ہیں ۔ انہوں نے بتایا کہ حاملہ خواتین ، بوڑھے اور کمزور افراد کو خصوصی طبی غذا فراہم کی جارہی ہے۔صوبائی کمشنر نے اسکول ، پیشہ ورانہ مرکز ، کھیل کے میدان اور ہولڈنگ سینٹر کے دیگر حصوں سمیت مختلف حصوں کا چکر لگایا۔ انہوں نے قیدیوں سے بھی بات چیت کی اور ان کی خیریت دریافت کی۔یہ بات قابل ذکر ہے کہ فارنرز ایکٹ 1946 کی شق کے مطابق کچھ غیرقانونی تارکین وطن کو حکام نے نوٹیفائیڈہولڈنگ مراکز میں رکھا ہوا ہے اور انھیں ملک بدر کرنے کے عمل کا آغاز کیا گیا ہے۔صوبائی کمشنر نے سی ای او ، سی ایم او ، آئی سی ڈی ایس اور دیگر محکمہ جات کو بھی ہدایت کی کہ وہ اس سلسلے میں جاری ہدایت نامہ کے مطابق ہولڈنگ سنٹر میں تمام ضروری مدد اور سہولیات فراہم کرے۔