روپ نگر انہدامی مہم کے متاثرین کی بازآبادکاری کا مطالبہ

راجوری//بار کونسل کے بینر تلے راجوری عدالت کے وکلاء نے جموں کے روپ نگر علاقے میں جموں ڈیولپمنٹ اتھارٹی کی طرف سے چلائی گئی حالیہ مسماری مہم کے متاثرین تمام بے گھر خاندانوں کی فوری بحالی کا مطالبہ کیا ہے۔وکلاء بشمول شوکت علی خسرو، فاروق چودھری، ممتاز احمد، ترون وسن، ریاض احمد، سجاد چودھری، ذوالفقار کاسانہ، شوکت چودھری، شفاعت علی نے پریس کلب راجوری میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وکلاء نے جموں ڈیولپمنٹ اتھارٹی کی طرف سے روپ نگر علاقہ میں چلائی گئی حالیہ مسماری مہم کی مذمت کی اور کہا کہ اس منتخب کارروائی کی وجہ سے متعدد خاندان بے گھر ہو گئے ہیں۔وکلاء اس مہم کو غیر قانونی اور غیر انسانی قرار دیتے ہیں۔انہوں نے تمام بے گھر خاندانوں کی فوری بحالی کا مطالبہ کیا اور کہا کہ جموں میں کچھ تنظیمیں اس معاملے کو فرقہ وارانہ رنگ دینے کی کوشش کر رہی ہیں جو جموں و کشمیر کے امن کے خلاف ہے اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کو ایسی تنظیموں کے خلاف کارروائی شروع کرنی چاہیے۔انہوں نے اس مسئلہ میں جموں و کشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر کی مداخلت کا بھی خیر مقدم کیا اور کہا کہ یوم جمہوریہ کے موقع پر لیفٹیننٹ گورنر کا بیان خوش آئند ہے۔