روشنیوں کا تہواردیوالی ،انتہائی جوش و خروش کے ساتھ منایا گیا

 سرینگر/ /روشنیوں کا تہوار’دیوالی‘ جمعرات کو پوری ریاست میں انتہائی جوش و خروش کے ساتھ منائی گئی جس کے دوران پٹاخے سر کے گئے اورمندروں میں پوجا پاٹ کا اہتمام کیا گیا۔ دیوالی کے موقع پر وادی کے مختلف علاقوں میں ایک مرتبہ پھرمذہبی بھائی چارے کی روایات کو دہراتے ہوئے مسلمانوں نے ہندﺅں کے گھر جاکر انہیں مبارک باد دی اور ہندﺅں سے مٹھائیاں و تحائف حاصل کئے۔ سرینگر کی ایسی بستیوں جہاں ہندوآبادہیں ،نے پٹاخے سرکے اور خصوصی پوجا پاٹھ کی۔ دیوالی کے موقعہ پرسرینگر کے تجارتی مراکز لالچوک ، ہری سنگھ ہائی سٹریٹ اور جواہر نگرمیں موجود مندروںمےںگہما گہمی دےکھنے کوملی۔اس کے علاوہ وادی میں تعینات فورسز اہلکاروں نے اس تہوار کے موقعہ پر پٹاخے ، مٹھائیاں اور روایتی چراغاں کےلئے دئےے اور موم بتیاں خریدنے میں جوش و خروش کا مظاہرہ کیا۔ اندرا نگر اور شیوپورہ میں شام کو ہندوبرادری نے پٹاخے سرکے اور غیر ریاستی سیاحوں اور فورسزاہلکاروں نے شہر کے مختلف علاقوں میں بچوں میں مٹھائیاں تقسم کیں۔ دیوالی کے پیش نظر گذشتہ کئی روز سے مٹھائیوں کی خریدو فروخت جاری تھی۔ اس موقعہ پر مٹھائی کی دکانوں پر جم کر خریداری کی گئی ۔ اوڑی میںلگامہ،بانڈی اور دیار نامی علاقوں میں رہنے والے پنڈتوںنے لگامہ مندر میں پوجا پاٹ کا اہتما م کیا ۔اس موقعہ پر مقامی مسلمان حسب روایت ہندﺅں کے گھر گئے اور انہیں مبارکباد دی۔بارہمولہ قصبہ کے مین چوک میں واقعہ مندراور شلپتری مندر خانپورہ میں علی الصبح خصوصی تقاریب منعقد ہوئیں جن میں قصبے میں مقیم کشمیری پنڈتوں کی ایک بڑی تعداد نے حصہ لیا۔وہاں بھی پنڈتوں نے اپنی دکانوں اور مندر کے باہر چراغاں کیا۔اسی طرح کی اطلاعات بڈگام،گاندربل،اننت ناگ،پلوامہ اور دیگر اضلاع سے بھی موصول ہوئی ہیں۔