روز لین کالونی قمر آباد ؛ معمولی بارش بھی مکینوں کیلئے عذاب سے کم نہیں

سرینگر //روز لین قمر آباد کالونی قمرواری سرینگرکے مکینوں کیلئے معمولی بارش بھی کس بڑی مصیبت سے کم نہیں ہوتی، کیونکہ ناکارہ ہو چکے ڈرنیج سسٹم کی مرمت میں تاخیر کی وجہ سے بارشوں کا پانی نہ صرف مکانوں کے سہن میں کئی کئی دنوں تک رہتا ہے بلکہ جب زیادہ پانی جمع ہو جاتا ہے تو یہ مکانوں کی نچلی منزلوں میں بھی داخل ہو جاتا ہے جس کے سبب مقامی آبادی کو انتہائی مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔مقامی لوگوں نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ کالونی میں ڈرنیج سسٹم مکمل طور پر ناکارہ ہیں،جبکہ کالونی میں سڑک کے کنارے پر کوئی نالی ہی موجود نہیں ہے جس کے ذریعے پانی کی نکاسی ممکن بن سکے ۔کشمیر عظمیٰ کے آفس پر آئے لوگوں کے ایک وفد نے بتایا کہ کالونی میں 20کے قریب کنبے رہائش پزیر ہیں اور ظہور احمد بٹ کے مکان سے لیکر فیاض احمد خان کے مکان تک پانی کی نکاسی کا کوئی بھی بندوبست نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ معمولی بارش میں بھی وہ کئی کئی دنوں تک گھروں میں ہی محصور رہتے ہیں کیونکہ گندہ پانی نہ صرف اُن کے گھروں کی نچلی منزلوں میں داخل ہو جاتا ہے بلکہ کئی کئی دنوں تک سہن میں بھی جمع رہتا ہے ۔وفد نے بتایا کہ گندے اور بدبھودار پانی سے جہاں کئی طرح کی بیماریاں پھوٹ پڑھنے کا خطرہ لاحق ہو گیا ہے، وہیں کالونی کے بچے بھی سکول تک نہیں جا سکتے ہیں جبکہ نمازیوں کو بھی صبح اور شام مسجد تک جانے میں انتہائی تکلیف دے مشکلات پیش آتی ہیں ۔مقامی لوگوں نے بتایا کہ کالونی میں سڑک کے کناروں پر کوئی بھی نالی تعمیر نہیں کی گئی ہے۔انہوں نے بتایا کہ پچھلے 15برسوں سے لوگ اس انتظار میں ہیں کہ شاہد اُن کی جانب خصوصی توجہ دے کر اُن کے مسائل کو حل کیا جائے گا لیکن اُن کی جانب کوئی بھی دھیان نہیں دیا گیا ۔لوگوں نے میونسپل حکام پر الزام عائد کیا ہے کہ انہوں نے اس حوالے سے کئی مرتبہ انہیں آگاہ کیا لیکن لوگوں کی مشکلات کی جانب کس نے بھی کوئی دھیان نہیں دیا ۔ انہوں نے ریاستی گورنر ستیہ پال ملک کے علاوہ کمشنر میونسپل کارپوریشن    سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ اس جانب خصوصی توجہ دے کر لوگوں کی مشکلات کا ازالہ کریں تاکہ مستقبل میں لوگوں کو مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے۔