رمضان میں ضرورتمندوں کا خیال رکھا جائے: مولانا حامی

سرینگر//کاروان اسلامی کے امیر مولانا غلام رسول حامی نے ماہ رمضان میں نادار، مفلوک الحال ، مساکین ، یتیم اور حالات سے متاثرہ لوگوں کی مالی معاونت کرنا اسلامی فرض ہے۔ جمعتہ المبارک پر مرکزی جامع مسجد شریف اومپورہ بڈگام میں عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے مولانا حامی نے کہاکہ پوری وادی میں مدارس کی ایک خاصی تعداد دینِ مبین کی مشعل کو روشن کرنے میں ایک اہم کردار ادا کر رہے ہیں ۔ ان مدارس کی آمدنی کا کوئی مستقل ذریعہ نہیں ہوتا ہے اس لئے اس مقدس مہینے میں ان اداروں کی مالی معاونت کا بھی خاص خیال رکھا جائے۔ انہوں نے اس بات پر اپنی گہری تشویش کا اظہار کیا کہ ریاست کے اطراف و اکناف میں پیشہ ور بھکاریوں کی ایک خاصی تعداد اس پورے مہینہ میں سڑکوں، مسجدوں ، خانقاہوں اور زیارتوں پر موجود پائے جاتے ہیں جن سے عام و خواص تشویش کا شکار ہوتے ہیں اور ایسی صورتحال سے حقیقی مستحقین کی مالی معاونت سے محرومی بھی ممکن ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت پورے عالم اسلام میں درد و کرب کے حالات موجود ہیں جس میں شام، فلسطین، برما اور بالخصوص ریاست جموں و کشمیر قابل توجہ ہیں لہٰذا صاحب ثروت لوگ نیز دینی، فلاحی جماعتوںاور انجمنوں پر یہ لازم ہے کہ وہ اس مقدس مہینے میں مکمل طور حقیقی مستحقین کی پہچان کر کے ممکنہ مالی معاونت کریں۔