رمضان المبارک میں بجلی کٹوتی افسوسناک:میر/لائیگرو

سرینگر//اپنی پارٹی کے سینئر نائب صدر غلام حسن میر اور پی ڈی پی (یوتھ)لیڈر عارف لائیگرو نے رمضان المبارک کے مقدس مہینے میں بجلی سپلائی میں بار بار خلل پر اپنی تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ سحری اور افطار کے اوقات پر بجلی سپلائی میں خلل سے لوگوں کو بے حد مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔اپنی پارٹی کے سینئر نائب صر غلام حسن میر نے کہا کہ انتظامیہ اس مقدس مہینے میں بھی لوگوں کو بجلی جیسی ضروری سروس فراہم کرنے میں ناکام ثابت ہورہی ہے جبکہ متعلقہ انتظامیہ یہ بتانے سے بھی قاصر نظر آرہی ہے کہ آخر وادی کے ہر علاقے میں بار بار بجلی سپلائی کیوں متاثر ہورہی ہے۔ غیر متواتر بجلی سپلائی کی وجہ سے لوگوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ سب سے زیادہ پریشان کن بات یہ ہے کہ افطاری اور سحری کے اوقات میں وادی کے بیشتر علاقے گھپ اندھرے میں ڈوبے ہوئے نظر آتے ہیں، جس کی وجہ سے روزہ داروں کو ان گنت مسائل کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ بجلی کے حوالے سے صورتحال یہ ہے کہ بعض علاقوں میں ہر گھنٹے یا دو گھنٹے کے بعد یکسر پاور سپلائی معطل کردی جاتی ہے۔ یہ صورتحال متعلقہ حکام کے غیر ذمہ دارانہ رویہ کی عکاسی کرتی ہے۔ لیفٹنٹ گورنر انتظامیہ کو اس ضمن میں مداخلت کرتے ہوئے یہ بات یقینی بنانی چاہئے کہ اس مقدس مہینے میں لوگوں کو بجلی سپلائی جیسی اہم ضرورت سے محروم نہ رکھا جائے۔ سرینگر اور وادی کے کئی حصوں میں بجلی کی غیر مقررہ کٹوتی کا سخت نوٹس لیتے ہوئے پی ڈی پی یوتھ لیڈر عارف لائیگرو نے رمضان کے مقدس مہینے میں بلاتعطل بجلی کی فراہمی فراہم نہ کرنے پر انتظامیہ کی تنقید کی۔انہوں نے کہا کہ رمضان المبارک خاص طور پر سحری اور افطار کے دوران بجلی کی غیر مقررہ کٹوتی نے شہر بھر کے لوگوں کو کافی پریشانی کا سامنا کرنا پڑا ہے۔لائیگرو نے کہا کہ عام طور پر لوگ شکایت کرتے ہیں کہ سحری اور افطار کے وقت اکثر بجلی نہیں ہوتی اور اسی وجہ سے انہیں اپنے مذہبی فرائض کی ادائیگی میں شدید پریشانی کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ انہوں نے رمضان المبارک کے دوران خاص طور پر سحری اور افطار کے دوران بلاتعطل بجلی کی فراہمی کا مطالبہ کیا۔انہوں نے انتظامیہ سے اپیل کی کہ اس مسئلہ پر توجہ دی جائے، جو کہ اس مقدس مہینے میں مزید بڑھ گیا ہے اور متاثرہ علاقوں کو بلاتعطل بجلی فراہم کی جائے۔