راہل نے لوک سبھامیںمارے گئے کسانوں کی فہرست پیش کی | معاوضہ اور ملازمت دینے کی مانگ

نئی دہلی//یو این آئی// کانگریس کے لیڈر راہل گاندھی نے ملک میں تین زرعی قوانین کے خلاف تحریک میں جانے گنوانے والے کسانوں کی فہرست کل لوک سبھا میں پیش کرتے ہوئے مرکزی حکومت سے مانگ کی کہ ہریانہ اور پنجاب کے ان کسانوں کے اہل خانہ کو معاوضہ اور ملازمت دی جائے ۔لوک سبھا میں وقفہ صفر شروع ہوتے ہی صدر اوم برلا نے مسٹر گاندھی کا نام پکارا۔ مسٹر گاندھی نے سب سے پہلے انہیں بولنے کا موقع دینے کے لئے شکریہ ادا کیا اور کہاکہ جیسا کہ پورا ملک جانتا ہے کہ کسان تحریک میں تقریباً سات سو کسانوں نے شہادت دی ہے ۔ وزیراعظم جی نے خود ملک کے کسانوں سے معافی مانگی ہے اور اپنی غلطی قبول کی ہے ۔کانگریس کے لیڈر نے کہاکہ گزشتہ 30نومبر کو وزیر زراعت سے جب پوچھا گیا کہ کسان تحریک میں کتنی اموات ہوئی ہیں تو انہوں نے کہاتھا کہ ان کے پاس کوئی اعدادو شمار نہیں ہے ۔ انہوں نے کہاکہ وہ یہ فہرست لیکر آئے ہیں اور اسے ایوان کی میز پر رکھنا چاہتے ہیں۔ پنجاب حکومت نے ایسے چار سو کسانوں کو پانچ لاکھ روپے کا معاوضہ دیا ہے اور 152کو ملازمت دی ہے ۔ ایک فہرست ہریانہ کے 70 کسانوں کی بھی ہے ۔ انہوں نے کہاکہ وزیراعظم جی نے معافی مانگی ہے اور کتنے شہید ہوئے ہیں، یہ انکو پتہ نہیں ہے ۔ یہ نام ہمارے پاس ہیں، میں چاہتا ہوں کہ جو حق ان کو ملنا چاہئے وہ حق پورا ملنا چاہے ۔ ان کسانوں کے کنبوں کو معاوضہ اور ملازمت ملنی چاہئے ۔مسٹر گاندھی اتنا کہہ کر بیٹھ گئے ۔
 
 
 
 

حکومت کی تجویز پر | آج فیصلہ ہوگا:سنیکت کسان مورچہ

نئی دہلی// سنیکت کسان مورچہ نے کہاکہ تحریک ختم کرنے کیلئے مرکزی حکومت کی طرف سے بھیجی گئی تجویز پر بدھ کی میٹنگ میں فیصلہ کیا جائے گا۔سنیتک کسان مورچہ نے کل حکومت سے ایک تحریری تجویز موصول کی تصدیق کی ہے ۔ سندھو بارڈر پر ایس کے ایم کی میٹنگ میں کسان لیڈروں نے اس تجویز پر تعمیری بات چیت کی۔حکومت کی تجویز کے بعض نکات پر مزید وضاحت مانگی جائے گی اور آگے کی بات چیت کے لئے بدھ کو دوپہر 2بجے پھر سے میٹنگ کرے گا۔ مورچہ کو حکومت سے مثبت جواب کی امید ہے ۔مورچہ نے کہاکہ مرکز کی طرف سے بھیجی گئی تجویز پر مکمل طورپر اتفاق رائے نہیں ہوا ہے ۔ ایم ایس پی کیلئے کمیٹی پر کچھ اعتراض ہے ۔ تحریک واپس لئے جانے کی شرط پر بھی اعتراض ہے ۔ تحریک واپس لینے پر ہی مقدمات واپس لینے کی بات کہی گئی ہے ۔