رانی بد تیتر سکول کی ’اپ گریڈیشن ‘کا عمل شروع

راجوری//کشمیر عظمیٰ اخبار میںراجوری ضلع کے رانی بد تیتر علاقہ میں ہائی سکول کی عدم دستیابی و طلباء کی مشکلات کے سلسلہ میں شائع ہوئی خبر کے دو دن بعد انتظامیہ نے علاقے کے دو سرکاری مڈل اسکولوں میں سے کسی ایک کو بھی اپ گریڈ کرنے کا عمل شروع کیا ہے۔چیف ایجوکیشن آفیسر راجوری نے زونل ایجوکیشن آفیسر ڈونگی کو دو دن کے اندر فزیبلٹی(اِمکانِیَت) رپورٹ پیش کرنے کا حکم جاری کیا ہے ۔کشمیر عظمیٰ اخبار کی جانب سے رانی بد تیتر گائوں کے بچوں کی تعلیم کے سلسلہ میں ایک تفصیلی خبر شائع کی تھی جس میں کہا گیا تھا کہ ہائی اسکول کی عدم دستیابی کی وجہ سے طلباء کو آٹھویں جماعت سے اوپر کی تعلیم حاصل کرنے کیلئے جنگلاتی علاقے سے 4 کلومیٹر سے زیادہ کا سفر طے کر کے چنگس اسکول جانا پڑتا ہے۔ .اس علاقے کے بہت سے بچے خاص طور پر لڑکیاں آٹھویں جماعت کے بعد اسکول چھوڑ دیتی ہیں کیونکہ ان کے والدین اپنے بچوں کو گھنے جنگل والے علاقے سے جانے کی اجازت دینے سے گریز کرتے ہیں۔کشمیر عظمیٰ کی خبر کا نوٹس لیتے ہوئے محکمہ تعلیم نے اسکول کی اپ گریڈیشن کی تجویز پیش کرنے کا عمل شروع کر دیا ہے۔چیف ایجوکیشن آفیسر راجوری نے زونل ایجوکیشن آفیسر ڈونگی سے کہا ہے کہ وہ گورنمنٹ مڈل اسکول رانی اور گورنمنٹ مڈل اسکول بد تیتر کو اگلے درجے تک اپ گریڈ کرنے کیلئے فزیبلٹی رپورٹ پیش کریں۔