رام میں محکمہ تعلیم کے عارضی باورچیوںکا احتجاج نواز رونیال

رام بن // ضلع رام بن میں گورنمنٹ سکولوں میں کام کر رہے کنٹیجنٹ پیڈ ورکرس (مڈے ڈے میل باورچیوں) نے ڈسٹرکٹ کمپلیکس رام بن کے باہر اپنی مانگوں کو لیکر احتجاجی مظاہرہ کیا۔احتجاج میں شامل سی پی ڈبلیو باورچیوں نے محکمہ تعلیم سمیت انتظامیہ کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے انکے ماہانہ مشاہرہ میں اضافہ کیے جانے کی پر زور مانگ کی۔سی پی ڈبلیو ورکرز کا رام بن میں احتجاجاحتجاجیوں نے میڈیا نمائندوں کے ساتھ بات کرتے ہوئے کہا کہ انہیں یومیہ 30روپے بطور اجرت فراہم کی جا رہی ہے جو آج کے مہنگائی کے دور میں انکے ساتھ مذاق سے کم نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ ماہانہ ایک ہزار روپے اجرت بھی انہیں ہر ماہ نہیں دی جاتی۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ منیمم ویجز ایکٹ کے حساب سے سی پی ڈبلیو باورچیوں کو اجرت فراہم کا حکمنامہ جاری کیے جانے کے باوجود انہیں ماہانہ ایک ہزار روپے ہی دیے جاتے ہیں۔انہوں نے انتظامیہ سے منیمم ویجز ایکٹ کو لاگو کئے جانے کے علاوہ دس سال سے زائد عرصہ سے کام کر رہے افراد کو مستقل ملازمت فراہم کرنے کی بھی مانگ کی۔ احتجاجیوں نے کہا کہ اپنی مانگوں کو لیکر انہوں نے رام بن سے جموں تک ہر ضلع میں احتجاجی مظاہرے کیے جو انکے مطابق بے سود ثابت ہوئے۔ انہوں نے انتظامیہ کو انتباہ کرتے ہوئے کہا ’’اگر ہماری مانگیں پوری نہ کی گئیں تو 20 اگست سیاحتجاج میں مزید شدت لائی جائے گی‘‘۔