رام بن میں لیبر قوانین کی خلاف ورزیوں کے خلاف

بانہال // پچھلے 120 روز سے  ریلوے اور فورلین تعمیراتی کمپنیوں کی طرف سے لیبر قوانین کی خلاف ورزیوں کے خلاف دھرنے پر بیٹھے کنسٹریکشن ورکرس یونین رامبن کے بینر تلے رام بن کے کیلا موڑ علاقے میں منگل کے روزاحتجاجی مظاہرہ کئے گئے تاہم وہاں تعینات پولیس کی بھاری نفری نے احتجاجی مطاہرین کو شاہراہ پر خلل ڈالنے کی اجازت نہیں دی۔ احتجاجی ورکروں کا مطالبہ ہے کہ فورلین اور ریلوے تعمیراتی کمپنیاں لیبر قوانین کے تحت ضلع رام بن کے سینکڑوں ورکروں کو ان کے حقوق ادا نہیں کر رہی ہیں اور تعمیراتی کمپنیاں مبینہ غنڈی گردی سے مزدوروں کے حقوق سلب کر رہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہاں کام کرنے والے ہنر مندوں اور غیر ہنر مند ورکروں اور مزدوروں کا مسلسل استحصال کیا جا رہا ہے اور پورے کام کے عوض کم اجرتیں ادا کی جاتی ہیں جو لیبر قوانین کی کھلم کھلا خلاف ورزی ہے ۔ انہوں نے الزام لگایا کہ ضلع انتظامیہ رام بن مزدوروں کے مسائیل کا نوٹس لینے کے بجائے ان پر ہی دبائو ڈال رہی ہے اور گذشتہ روز کی میٹنگ میں ان کے ورکروں کے ساتھ ضلع حاکموں کا سلوک ناروا تھا۔ اس احتجاجی مظاہرے اور مسلسل دھرنے کی قیادت مقامی سماجی کارکن کاکا سنگھ راجو کر رہے ہیں۔ منگل کے روز اس احتجاج میں شامل لوگوں سے ملنے کیلئے بھارتیہ جنتا پارٹی ضلع صدر رام بن راکیش سنگھ درورہ نے کیلا موڑ کا دورہ کیا اور احتجاجیوں کو یقین دلایا کہ وہ لیبر قوانین کے نفاذ کیلئے اپنی طرف سے ہر ممکن کوشش کرینگے تاکہ ورکروں کے ساتھ روا مزید نا انصافی کو روکا جائے۔