راجوری میں مشکوک موت کا معاملہ

راجوری //راجوری ضلع میں گزشتہ روز ایک شخص کی ہوئی مشکوک موت کے بعد اہل خانہ و رشتہ داروں نے احتجاج کے دوران قتل کا الزام کرتے ہوئے پورے معاملہ کی تفصیلی جانچ کرنے کا مطالبہ کیا۔مظاہرین نے کہا کہ محمد اشرف ولد عبدال سکنہ چوا گردن کی موت مشکوک حالت میں ہوئی ہے ۔انہوں نے گور نمنٹ میڈیکل کالج کے سامنے احتجاج کرتے ہوئے سڑ ک کو گاڑیوں کی آمد ورفت کیلئے بھی بند کیا ۔ انہوں نے الزام عائد کرتے ہوئے کہاکہ کچھ افراد نے محمد اشرف کو اپنے ساتھ لیا تھا جس کے بعد اس کا قتل کر دیا ہے ۔انہوں نے بتایا کہ کچھ افراد نے بعد میں بتایا کہ وہ بیہوشی کی حالت میں پڑا ہوا ہے ۔اہل خانہ و دیگر مظاہرین نے مانگ کرتے ہوئے کہاکہ اس سلسلہ میں قتل کا مقدمہ درج کر کے تفصیلی تحقیقات کی جائے ۔اس دوران راجوری پولیس سٹیشن سے پولیس کی ایک ٹیم موقعہ پر پہنچی اور انہوں نے مظاہرین کو یقین دلاتے ہوئے احتجاج ختم کروایا ۔پولیس آفیسران نے بتایا کہ مذکورہ معاملہ کے سلسلہ میں تھنہ منڈی میں ایک مقدمہ درج کیا جاچکا ہے جبکہ مذکورہ شخص بیہوشی کی حالت میں ملا تھا ۔پولیس نے اپنے ایک بیان میں کہاکہ مرحوم بیہوشی کی حالت میں ملا تھا جس کے بعد اس کو علاج معالجہ کیلئے ہسپتال منتقل کیا گیا تاہم دوران علاج اس کی موت واقعہ ہو گئی ۔