ذوالفقار علی کی مرکزی وزیر برائے ترقی انسانی وسائل سے ملاقات

 نئی دہلی//سکولی تعلیم، حج و اوقاف اور قبائلی امور کے وزیر چوہدری ذوالفقار علی نے انسانی وسائل کو فرو غ دینے کے مرکزی وزیر پرکاش جاویڈکر کے ساتھ ملاقات کی۔اس موقعہ پر ریاستی وزیر نے جموں وکشمیر میں50 ہزار طلاب کی صلاحیت والے50 رہایشی سکول قائم کرنے کا مطالبہ کیا۔انہوں نے مرکزی وزیر سے مطالبہ کیا کہ ریاست بھر کی درسگاہوں کی جدید کاری کے لئے رقومات فراہم کی جائیں تا کہ وہ جدید علوم بھی پڑھاسکیں۔وزیر موصوف نے ریاست میں آر ایم ایس اے کے تحت ہائی اور ہائیر سکینڈری سکولوں کی مناسب تعداد فراہم کرنے کی بھی وکالت کی۔اس موقعہ پر بتایا گیا کہ مرکزی وزیر نے ریاست میں پہلے مرحلے تحت بارہ مولہ اور کپواڑہ اضلاع کے سکولوں کو بڑھاوا دینے سے اتفاق کیا ہے۔وزیر نے ایس ایس اے اساتذہ کی التواء میں پڑی1162 کروڑ روپے کی تنخواہوں کا معاملہ بھی مرکزی وزیر کی نوٹس میں لایا۔ذوالفقار علی نے ریاست میں مزید کیندریہ ودھیالیہ، جواہر نودھیا  ودھیالیہ کھولنے کی مانگ کی تاکہ دُور دراز اور سرحدی علاقوں کے طلاب مستفید ہوسکیں۔اس حوالے سے مرکزی وزیر نے یقین دلایا کہ ریاست کے سرحدی علاقوں میں پانچ کیندریہ ودھیالیہ قائم کئے جائیں گے۔میٹنگ میں مرکزی وزیر کے پی ایس مندیپ کے بھنڈاری، سیکرٹری سکول تعلیم فاروق احمد شاہ اور کئی دیگر افسران بھی موجود تھے۔