دونوں بازئوں سے محروم 16 سالہ تیرانداز | عالمی پیراگیمز میں سونے کا تغمہ جیت لیا،کشتواڑ میں خوشی کی لہر

عاصف بٹ

کشتواڑ//ورلڈ آرچری کے مطابق جموں و کشمیر کے ضلع کشتواڑ کے علاقہ لوئیدھر سے تعلق رکھنے والی 16 سالہ تیر انداز شیتل دیوی بین الاقوامی سطح پر مقابلہ کرنے والی پہلی خاتون تیر انداز ہیں جس نے چین کے ہانگزو میں ایشین پیرا گیمز میں تین تمغے جیت کر نہ صرف جموں کشمیر بلکہ پورے ملک کا نام روشن کیاہے۔ خواتین کے ڈبلز کمپاؤنڈ میں اپنے چاندی کے بعد شیتل نے مکسڈ ڈبلز اور خواتین کے انفرادی میں بھی دو گولڈ میڈل اپنے نام کئے۔ جمعہ کی صبح اس نے پیرا ایشین گیمز کے فائنل میں سنگاپور کی علیم نور سیدہ کو شکست دے کر خواتین کے کمپاؤنڈ میں سونے کا تمغہ جیتا۔ شیتل نے سریتا کے ساتھ جوڑی بناتے ہوئے خواتین کی ٹیم کا سلور جیتا، اور راکیش کمار کے ساتھ مخلوط ٹیم گولڈ جیتا۔ ایک ایسی خاتون کے لیے ایک شاندار کامیابی ہے جس نے صرف دو سال قبل کمان اور تیر کی تربیت شروع کی تھی۔اسکول جانے والی لڑکی سے ایشین پیرا گیمز میں میڈل جیتنے والی اس کی تبدیلی اس وقت شروع ہوئی جب اس نے سال 2021 میں کشتواڑ میں ہندوستانی فوج کے زیر اہتمام یوتھ ایونٹ کے لیے داخلہ لیا۔ اس کا مصنوعی بازو حاصل کرنے کے لیے وہ بنگلورو میں میجر اکشے گریش میموریل ٹرسٹ تک پہنچیں جس نے آن لائن کہانی سنانے کے پلیٹ فارم Being You سے رابطہ کیاجس کے بعد اس نے پیچھے مڑکرنہ دیکھا۔اسے قبل بھی شیتل نے قومی سطح پر متعدد میڈل اپنے نام کے۔ضلع کشتواڑ کے دوردراز علاقہ لوئیدھر سے تعلق رکھنے والی شیتل دیوی دونوں بازوں سے محروم ہے لیکن اس کے باوجود اس بہادر لڑکی نے ہمت نہ ہاری اور سبھی رکاوٹوں کو دور کرتے ہوئے آج اس مقام پر پہنچی۔اس کے والدین پیشے سے مزدوری کا کام کرتے ہیں جبکہ ماں گھر چلاتی ہے ایک چھوڑے سے گھر میں رہنے والی شیتل نے پورے ملک کا نام روشن کیا ۔اس کی کامیابی سے نہ صرف علاقے کے لوگ خوش ہیں بلکہ پورے جموں کشمیر کے عوام میں خوشی کا ماحول ہے۔ ان کی جیت پر وزیر عظم نریندر مودی اور دیگر لیڈران نے مبارکباد پیش کی۔