دورِجدید میں عثمان آباد عمر کالونی (سی) لال بازارقدیم زمانہ کی تصویر | سڑکوںکی حالت ناگفتہ بہہ، نکاسیٔ آب ندارد،بجلی ،کھمبے اور ٹرانسفارمر بھی غائب

 سرینگر // عثمان آباد عمر کالونی (سی) لال بازارمیں دورِ جدید میں آبادی بنیادی سہولیات سے محروم ہیں جس کے نتیجہ میں وہ گوناگوں مشکلات کا سامنا کررہے ہیں۔ مقامی آبادی کاکہنا ہے کہ علاقہ میںسڑکوں کی حالت ناگفتہ بہہ ہے جبکہ نکاسیٔ آب کی سہولیات کا فقدان اور ترسیلی لائنوں اور ٹرانسفارمرکی عدم دستیابی کا سامنا ہے۔ لوگوں کاکہنا ہے کہ علاقہ میں 100سے زائد کنبے رہائش پذیر ہیں جو تمام بنیادی سہولیات سے محروم ہیں۔ مقامی شہری محمد اسماعیل میر کاکہنا ہے کہ ’’ کالونی میں بجلی کی فراہمی کیلئے نہ تو ترسیلی لائنوں کیلئے کھمبے نصب کئے گئے ہیں اور نہ ہی کالونی میں بجلی ٹرانسفارمر نصب کیا جارہا ہے‘‘۔مذکورہ شہری نے کہا کہ لوگوں نے ضلع انتظامیہ اور پی ڈی ڈی دفتر کے سینکڑوں چکر لگائے اور ان کی خوشیوں کا اُس وقت کوئی ٹھکانہ نہیں رہا جب مارچ میں بجلی ٹرانسفارمر کی تنصیب کی منظوری مل گئی۔ مذکورہ شہری نے کہاکہ رواں برس مارچ سے ابتک 8ماہ ہونے کو ہے لیکن ابھی تک بجلی ٹرانسفارمر نصب نہیں کیا گیا جو آبادی کے مذاق اور ناانصافی ہے ‘‘۔محمد اسماعیل میر نے کہاکہ اُن کے علاقہ کو ایک کلو میٹر دور حمزہ محلہ میں نصب ٹرانسفارمر سے بجلی فراہم کی جارہی ہے لیکن وولٹیج اس قدر کم ہے کہ بلب کو ڈھونڈنے کیلئے موم بتی روشن کرنا پڑتی ہے۔ عثمان آباد عمر کالونی سی میں رہنے والے ایک اور شہری میر فیصل کاکہناہے کہ بجلی کی عدم دستیابی اور کم وولٹیج کے سبب نہ صرف عوام بلکہ طلاب کو سخت مشکلات کا سامنا کرناپڑرہاہے‘‘ ۔مذکورہ شہری نے مزید کہاکہ ’’ نہ طلاب امتحانات کی تیاری کرپا رہے ہیں اور نہ ہی وہ آن لائن کلاسوں میں حصہ لے پارہے ہیں‘‘۔فیصل نے کہاکہ ’’ محکمہ بجلی نے عارضی طور پر صارفین کوبجلی فراہم کی ہے اور جس جگہ پر ترسیلی لائنوں پرہُک لگائے جارہے ہیں وہاں شارٹ سرکٹ سے آگ لگ سکتی ہے۔میر فیصل نے کہا کہ بجلی کی عدم دستیابی اور محکمہ بجلی کی جانب سے ہُک لگانے کی وجہ سے علاقے میں کبھی بھی بڑا حادثہ ہوسکتا ہے اور اسکی تمام تر ذمہ داری محکمہ بجلی پر عائد ہوگی‘‘۔ غلام محمد نامی ایک اور مقامی شہری نے کہا کہ ’ڈرینج کی عدم دستیابی کی وجہ سے بارشوں کا پانی سڑکوں پر ہی جمع ہوتا ہے اور سڑکیں نالوںمیں تبدیل ہوجاتی ہیں جس کے باعث عوام کا گھروں سے نکلنا محال ہوجاتاہے۔ مذکورہ شہری نے کہا کہ خستہ حال سڑکوں اور بجلی کی عدم دستیابی کی وجہ سے لوگوں کو صبح اور شام کے وقت مسجد تک جانا مشکل ہوجاتا ہے اور بارشوںکے دوران وہ گھروں میں ہی نماز ادا کرنے پر مجبور ہورہے ہیں۔ غلام محمد نے کہا کہ ؔ’’عثمان آباد کی لین نمبر 2، لین نمبر 3اور لین نمبر 4 کی سڑکوںکی حالت قابل رحم ہیں ۔مقامی آبادی نے ضلع ترقیاتی کمشنر سرینگرشاہد اقبال چودھری، چیف انجینئر پی ڈی ڈی اور چیف انجینئر یو ای ای ڈی سے اپیل کی ہے کہ عثمان آباد عمر کالونی میں رہنے والے لوگوں کو درپیش مشکلات کا ازالہ کرنے کیلئے فوری اقدامات کئے جائیں تاکہ عوام کو راحت پہنچ سکیں۔