درہال کیلئے ڈگری کالج کی مانگ …مقامی لوگوں نے دستخطی مہم شروع کی

راجوری //درہال میں کالج کے قیام کی مانگ پر مقامی لوگوں کی طرف سے دستخطی مہم شروع کی گئی ہے جو اگلے پندرہ دنوں تک جاری رہے گی جس کے بعد ایک یاداشت وزیر اعلیٰ کو پیش کی جائے گی ۔ درہال ڈیولپمنٹ فورم چیئر مین ایڈووکیٹ زاہد سرفراز کی قیادت میں شروع کی گئی اس دستخطی مہم میں بڑی تعداد میںلوگوںنے شرکت کی ۔انہوںنے کالج کی مانگ کرتے ہوئے کہاکہ اس دیرینہ اور جائز مانگ کو پورا نہ کرکے حکومت اس علاقے کے ساتھ ناانصافی کررہی ہے ۔اس سلسلے میں بات کرتے ہوئے زاہد سرفراز ایڈووکیٹ نے بتایا کہ درہال میںڈگری کالج کا قیام مقامی طلباء کیلئے کافی اہمیت کا حامل ہے لیکن کئی سال سے عوام کے ساتھ اس مطالبے کو پورا نہیں کیاجارہا اور خالی جھوٹے وعدے کئے جارہے ہیں ۔ان کاکہناتھاکہ کابینہ وزیر چودھری ذوالفقار علی نے بھی عوام سے وعدہ کیاتھا کہ وہ درہال میں ڈگری کالج کاقیام عمل میں لانے کے لئے اپنی سعی جاری رکھیں گے تاہم یہ وعدہ بھی ایفا نہیںہوا ۔ انہوںنے کہاکہ وہ حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ درہال کیلئے کالج کا اعلان کیاجائے ۔ان کاکہناہے کہ کالج نہ ہونے کی وجہ سے درہال کے سینکڑوں طلباء روز کئی کلومیٹر کا سفر طے کرنے کے بعد راجوری کالج پہنچتے ہیں جن کا آدھار دن سفر میں ہی گزر جاتا ہے اوریہ مسافت بہت ہی مہنگا ثابت ہورہی ہے جو غریب گھرانوں کے طلباء کیلئے ممکن نہیں ۔ انہوں نے کہاکہ انہیں وزیر تعلیم پر پورا بھروسہ ہے کہ وہ درہال کے لوگوں کے ساتھ انصاف کریںگے ۔زاہد ملک نے کہاکہ وہ پندرہ دن تک مہم چلانے کے بعد ایک یاداشت وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کو پیش کریںگے ۔