خورشید احمد گنائی نے جموں میں لوگوں کی شکایات سنیں

جموں//گورنر کے مشیر خورشید احمد گنائی نے گورنرس گریوینس سیل جموں میں متعدد عوامی وفود اور افراد کے مسائل اور مطالبات سنے ۔عوامی دربار کے دوران 25وفود اور کئی افراد نے مشیر موصوف کے ساتھ ملاقات کرکے اپنے مسائل کے حل میں اُن کی مداخلت طلب کی۔ہنچ ڈوڈہ سے آئے ایک وفد نے مقامی ہائی سکول کا درجہ بڑھانے کی مانگ کی۔ٹاپ نیل اور کاستی گڈھ سے آے وفود نے سڑکوں کی تعمیر اور مختلف محکموں میں خالی پڑی اَسامیوں کو پُر کرنے کا مطالبہ کیا۔ریاسی ضلع کے مونگری تحصیل سے آئے سرپنچوں ، پنچوں اور کالج کاڈی نیشن کمیٹی کے وفود نے مونگری میں ڈگری کالج کے قیام اور اس علاقے میں تعلیمی و زرعی زون قائم کرنے کا مطالبہ کیا۔ اِن وفود نے مونگری میں پولیس سٹیشن کھولنے اور پنجار ہائی سکول کا درجہ بڑھانے کی بھی مانگ کی۔رہبر تعلیم اساتذہ اور کالجوں میں اکیڈیمک اِنتظام کے تحت کام کرنے والے لیکچروں نے بھی اپنے مطالبات مشیر کی نوٹس میں لائے۔گووِند نگر گول گجرال سے آئے وفد نے علاقے میں سڑکوں کی تعمیر اور سٹریٹ لائیٹس نصب کرنے کی مانگ کی۔ڈوڈہ ضلع کے ہرنائی اور پنتھن سے آئے وفود نے پرنوٹ ، شوٹ ،پریم نگر دیہات کو حال ہی میں تشکیل دئیے بیلا تحصیل کے ساتھ ملانے کی مانگ کی۔اِن وفود نے پنتھن میں سٹیڈیم کی تعمیر کے علاوہ دیگر کئی مطالبات مشیر کے سامنے رکھے۔منگوٹا راجوری کے وفد نے زیارت بابا ذاکری شاہ ؒ کا انتظام مقامی اوقاف کے سپرد کرنے کا مطالبہ کیا۔اس کے علاوہ تنظیم مدارس اہل سنت نے بھی اپنے مطالبات مشیر موصوف کی نوٹس میں لائے۔گڈھی سیپی اودھمپور ،آرٹس اینڈ ریسرچ فائونڈیشن ، پارلی دھر رام نگر اودھمپور اور بپ چنانی سے آئے وفود نے عوامی نوعیت کے مسائل مشیر کے سامنے رکھے اور اِن مسائل کے فوری حل کا مطالبہ کیا۔مشیر موصوف نے تمام وفود اور افراد کے مطالبات غور سے سننے کے بعد انہیں یقین دِلایا کہ اُن کے جائز مطالبات مرحلہ وار بنیادوں پر پورا کئے جائیں گے۔