خواتین کیخلاف جرائم کی جڑ منشیات کا بڑھتا استعمال

 سری نگر//سری نگر کے سینئر سپرنٹنڈنٹ آف پولیس نے جمعرات کو کہا کہ سری نگر میں خواتین کے خلاف جرائم میں اچانک اضافہ نہیں ہوا ہے لیکن حال ہی میں کچھ معاملات سامنے آئے ہیں۔انہوںنے کہاکہ میر ی دانست اور خیال میں منشیات اور والدین کی اپنے بچوں میں نگرانی کی کمی شہر میں جرائم کی 2 بڑی وجوہات ہیں۔ایس ایس پی راکیش بلوال نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ خواتین کے خصوصی دستے کو شہر بھر میں تعینات کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ سری نگر میں جرائم میں ملوث نوجوان مختلف منشیات کے عادی ہیں جو بالآخر مختلف جرائم کی طرف لے جاتے ہیںنہوں نے مزید کہا کہ منشیات کے عادی افراد کے خلاف PSA کے تحت مقدمہ درج کیا جا رہا ہے۔ایس ایس پی سری نگر نے کہاکہ ہم منشیات کی زنجیر کو توڑنے کی کوشش کر رہے ہیں اور ہم سمجھ چکے ہیں کہ 2یا3 منشیات فروشوں کو گرفتار کرنے سے کچھ نہیں ہو گا۔ ہمیں کچھ وقت دیں اور میں آپ کو یقین دلاتا ہوں کہ لوگ فرق محسوس کریں گے۔۔یہ پوچھے جانے پر کہ پولیس تیزاب حملہ کیس میں چارج شیٹ کب داخل کرنے جا رہی ہے، ایس ایس پی راکیش بلوال نے کہا کہ2 دن کے اندر، پولیس چارج شیٹ داخل کر دے گی کیونکہ ایف ایس ایل کی رپورٹ بھی آرہی ہے۔چوری کی وارداتوں کے بارے میں انہوں نے کہا کہ نوجوانوں میں منشیات کے استعمال کی وجہ سے بھی چوری ہوتی ہے۔ہم ایک جامع نقطہ نظر کی پیروی کر رہے ہیں۔ اور آپ جلد ہی فرق دیکھیں گے۔ ہمیں عوامی تعاون کی ضرورت ہے جو ابھی تک ہماری توقع کے مطابق نہیں ہے۔