خفیہ ایجنسیاں نئے اخوان کی تشکیل میں مصروف:جہاد کونسل

 سرینگر//متحدہ جہادکونسل نے کشمیری عوام سے ہو شیار رہنے کی اپیل کرتے ہوئے انکشاف کیا ہے کہ داعش اور القاعدہ کے نام پربھارتی ایجنسیاں سابق حزب کمانڈرذاکر موسیٰ کی آڑ لے کر ایک خوفناک کھیل کھیلنے جارہی ہے جس کیلئے ایک نئے ’اخوان‘ کو تشکیل دیا جارہا ہے ۔کے ایم این کے مطابق جہادکونسل ترجمان سید صداقت حسین نے ایک بیان میں کہا کہ”جیسا کہ کشمیری عساکر بہت پہلے ہی یہ واضح کرچکے ہیں کہ جہاںبھارتی خفیہ ایجنسیاں اندرونی سطح پر تحریک آزادی کو کمزور کرنے کی سازشوں میں مصروف ہیں، وہیں عالمی سطح پر اس مقامی اور جائز تحریک کو داعش اور القاعدہ کا نام چسپاں کرکے اسے دہشت گردی ثابت کرنامقصود ہے“ ۔ ترجمان نے انکشاف کیا کہ پچھلے کئی مہینوں سے القاعدہ اورداعش کے نام پر سابق حزب کمانڈر ذاکر موسیٰ کی آڑ لے کر ایک نئی اخوان تشکیل دی جارہی ہے ۔انہوں نے کہا کہ بھارتی میڈیا پرداعش اور اس سے وابستہ بھارتی ایجنٹوں کو اس انداز میں پیش کیا جاتا ہے کہ جیسے وہ واقعی کسی جہادی تنظیم سے وابستہ ہیں ، ان مفروضوں کو حقیقت کا رنگ دینے کیلئے ،پچھلے کئی روز سے بھارتی الیکٹرانک اور پرنٹ میڈیا میں گلمرگ کے راستے دراندازی کا افسانہ تراش کر ذاکر موسیٰ کے ساتھ کسی میٹنگ کا حوالہ دے رہے ہیں ۔ترجمان نے کہا کہ کشمیری جوانوں سے خصوصی طور پر اپیل کی جاتی ہے کہ وہ دشمن کی اس خوفناک چال کو سمجھیں اور اس چال کو ناکام بنانے کیلئے اپنا کردار ادا کریں۔انہوں نے کہا کہ داعش کا چہرہ عراق ،شام اور افغانستان میںکھل کے سامنے آیا ہے اور افغانستان کے سابق امریکی حمایت یافتہ صدر حامد کرزئی نے اپنے ایک حالیہ انٹرویومیں داعش کی اصل حقیقت کو خود ہی آشکار کردیا ہے ۔ترجمان نے بتایا کہ ذاکر موسیٰ کے نام کی آڑ میں جموں و کشمیر میں ایک خوفناک خونی کھیل گروہی تصادم کے نام پرکھیلنے کی تیاریاں کی جارہی ہیں،اس صورتحال کا توڑ کرنے کیلئے پوری قوم اور مزاحمتی قیادت کا ایک ہی جگہ جمع ہونا لازمی ہے اور ساتھ ساتھ مشکوک افرد کے کردار پر بھی نظر رکھنے کی ضرورت ہے۔