خرگوش پالن ریاست میں ایک بڑی صنعت کے طوراُبھر سکتی ہے: ڈاکٹر سامون

سرینگر//پرنسپل سیکریٹری پشو و بھیڑ پالن ڈاکٹر اصغر حسن سامون نے کہا ہے کہ خرگوش کی اون اور گوشت کی قیمت کے مد نظر خرگوش پالن ریاست میں ایک بڑی صنعت کے طور اُبھر سکتی ہے۔ڈاکٹر سامون نے ان باتوں کا اظہار شمالی کشمیرکے پٹن علاقے میں قائم انگورہ خرگوش فارم کے دورے کے دوران کیا۔افسروں کو مقامی نوجوانوں کو اس صنعت کی جانب راغب کرنے کی تلقین کرتے ہوئے ڈاکٹر سامون نے کہا کہ ریاست میں خرگوش کی چمڑی کی مانگ کو پورا کرنے کی گنجائش ہے اور اس صنعت میں نوجوانون کے لئے روز گار کے اچھے وسائل موجود ہیں۔فارم کے دورے کے دوران ڈاکٹر سامون نے افسروں کو اس فارم کے ڈھانچے میں مزید بہتری لانے کی ہدایت دی ۔اس فارم میں فرانسیسی انگورہ، گرے گینٹس ، نیوزی لینڈ وائٹ اور چنچلاس نسل کے خرگوش پالے جاتے ہیں۔بعد میں ڈاکٹر سامون نے ہندواڑہ کا دورہ کے وہاں بھیڑ و پشو پالن اور ماہی پروری محکموں کی سرگرمیوں کا جائیزہ لیا۔ انہوں نے پوشنار میں شیپ بریڈنگ فارم کا دورہ کر کے اس کو مزید وسعت دینے کی ہدایت دی۔ڈاکٹر سامون نے مقامی فارمرز کے ساتھ تبادلہ خیال کے دوران محکمہ کی کارکردگی میں مزید بہتری لانے کے لئے اُن کی تجاویز طلب کیں۔ انہوں نے33 لاکھ روپے کی لاگت سے تعمیر کی گئی ویٹرنری ڈسپنسری کا افتتاح کیا جس کو جدید سہولیات اور آلات سے لیس کیا گیا ہے۔ڈاکٹر سامون نے شاما پرساد مکھرجی رربن مشن کے تحت8 فارمروں میں26 بھیڑیں تقسیم کیں۔بعد میں انہوں نے کٹلاری میں ٹراؤٹ فِش فارم کا بھی دورہ کیا۔