خانقاہ معلی میں عرس ختلان کی تقریب | بھاری تعداد میں عقیدتمندوں کی شرکت

سرینگر// عرس ختلان کے سلسلے میں سب سے بڑی تقریب خانقاہ معلی سرینگر میں منعقد ہوئی جہاں وادی کے اطراف واکناف سے بڑی تعداد میں آئے عقیدت مندوں نے شرکت کی۔ نماز ظہر سے سے قبل خانقاہِ معلی سرینگر میںمولانا ریاض احمد ہمدانی نے اولیاء کرام کی سیرت اور عظمت وشان بیان کرتے ہوئے کہا کہ امیر کبیر حضرت میر سید علی ہمدانیؒکی بدولت کشمیر کا چپہ چپہ دین اسلام سے منور ہوا۔انہوں نے فلسفہ عرس ختلان پر مفصل روشنی ڈالی۔انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ وہ خوف خدا میں رہ کر ہمیشہ نمازِ پنجگانہ اور تلاوت کلامِ پاک کثرت سے کیا کریں کیونکہ عالم اسلام اس وقت نہایت پریشانی میں ہے۔ نماز ظہر کے بعد ختمات ، درود ازکار اور اوراد خوانی کی مجلس آراستہ ہوئی جس کی پیشوائی امام و خطیب امام غلام محمد ہمدانی نے کی۔اس موقعہ پر صدر انجمن حمایت الاسلام مولانا خورشید احمدقانون گو نے اپنے خطاب میں کہاآج مُحسن کشمیر حضرت شاہ ہمدانؒ کے یوم وصال کے بعد یوم تدفین ہے جو عُرس ختلان سے معروف ہے آج ہی کے دن  پکھلی سے ختلان تک چھ مہینے مسافت کے بعد وصیت کے مطابق کولاب ختلان تا جکستان میں سپرد لحد ہوے۔ مولانا نے کہا کہ جن نفوس مقدس نے دین حق کی خدمت وحفاظت کی اللہ تعالیٰ اس کے عوض زمین وماحولیات کو اِن کے  اجساد مبارکہ کی حفاظت کرنے کی تمیز بخشی گئی اور عام طبعی تبدیلیوں سے مبرا کیا گیا آج پھر اگر ہم دین اور اپنے قلب کو انتشار سے محفوظ رکھیں گے اور شریعت کی اتباع کریں گے اللہ تعالیٰ ہمیں دنیا کے تمام شعبوں انتشاری فسادوں سے پاک کرکے قلب سلیم عطا کرکے دارالسلام میں داخل ہونے کی توفیق نصیب کرے۔