خاندانی سیاست سماجی انصاف کے منافی کانگریس اپنی ناکامیاں چھپانے کیلئے دلتوں اور پسماندہ طبقوں کو استعمال کررہاہے:مودی

عظمیٰ نیوزڈیسک
بیگوسرائے// وزیر اعظم نریندر مودی نے’خاندانی سیاست‘ پر شدید حملہ کرتے ہوئے اسے سماجی انصاف کے منافی قرار دیا اور کہا کہ بہار نے کئی دہائیوں سے اس کی وجہ سے نقصان اٹھایا اور جھیلا ہے۔ یہاں بہار کے لیے 27300 کروڑ روپے کے پروجیکٹوں سمیت 1 لاکھ 62 ہزار کروڑ روپے کے کئی پروجیکٹوں کا سنگ بنیاد رکھتے اور افتتاح کرتے ہوئے مودی نے کہا کہ خاندانی سیاست اور ووٹ بینک کی سیاست نے بہار کو بہت نقصان پہنچایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ خاندانی سیاست سماجی انصاف کے منافی ہے اور یہ ہنرمندوں کے ساتھ ناانصافی کرتی ہے۔وزیر اعظم نے کہا کہ راشٹریہ جنتا دل (آر جے ڈی) اور کانگریس اپنی اقربا پروری اور بدعنوانی کو چھپانے کے لیے دلتوں، استحصال زدہ طبقات اور پسماندہ طبقات کو ڈھال کے طور پر استعمال کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس قسم کی ذہنیت کو سماجی انصاف نہیں سمجھا جا سکتا، بلکہ یہ دراصل اس کے ساتھ دھوکہ ہے۔ مودی نے کہا، “حقیقی سماجی انصاف خوشامد سے نہیں ، مطمئن کرنے سے آتا ہے۔ مودی ایسے ہی سماجی انصاف، ایسے ہی سیکولرازم کو مانتا ہے۔ جب مفت راشن ہر مستحق تک پہنچے، جب ہر غریب مستحق کو مستقل مکان ملے، جب ہر بہن کو گھر ملے۔ گھر میں گیس، پانی کا نل، بیت الخلا ملتا ہے، جب غریب سے غریب کو بھی اچھا اور مفت علاج ملتا ہے، جب سمان ندھی ہر کسان کے بینک اکاؤنٹ میں آتی ہے، تب سیچوریشن ہوتا ہے اور یہی اصل سماجی انصاف ہے، پچھلے 10 برسوں میں جتنے کنبوں تک مودی کی گارنٹی پہنچی ہے، ان میں سب سے زیادھ کنبے دلت، پسماندہ اور انتہائی پسماندہ ہیں۔انہوں نے کہا کہ ہمارے لیے سماجی انصاف خواتین کی طاقت کو تقویت دینے کے بارے میں ہے۔ گزشتہ دس برسوں میں 1 کروڑ بہنوں کو بااختیار بنایا گیا ہے۔ مودی نے سوال کیا کہ صرف خصوصی کنبوں کو ہی کیوں بااختیار بنایا گیا جب کہ دیگر کنبوں کو بااختیار بنانے کی دوڑ میں بہت پیچھے چھوڑ دیا گیا۔ لالو پرساد یادو کا نام لیے بغیر انہوں نے کہا کہ 2014 سے پہلے ریلوے کے وسائل کو کیسے لوٹا گیا۔ نوکری کے نام پر زمینوں کی رجسٹریشن کا واقعہ ملک نے دیکھا ہے۔

مودی کا تمل ناڈو دورہ آج
یواین آئی
چنئی// وزیر اعظم نریندر مودی آج یعنی پیر کے روز تمل ناڈو کا دورہ کریں گے۔تقریباً 14.45 بجے مہاراشٹر کے ہوائی اڈے پر اترنے کے بعد، مودی ایک ہیلی کاپٹر میں یہاں سے تقریباً 70 کلومیٹر دور کلپکم جائیں گے، جہاں وہ بھاوینی کے ذریعے بنائے جانے والے ملک کے پہلے فاسٹ بریڈر ری ایکٹر کی پیش رفت کا جائزہ لیں گے۔وزیر اعظم تقریباً ایک گھنٹہ طویل پروگرام کے بعد ایک بار پھر ہیلی کاپٹر میں چنئی کے لیے روانہ ہوں گے اور آئندہ لوک سبھا انتخابات سے قبل شام 5 بجے کے قریب وائی ایم سی اے گراؤنڈ میں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی طرف سے منعقدہ جلسہ عام سے خطاب کریں گے۔ پروگرام کے بعد وہ تلنگانہ روانہ ہوں گے۔