خامیاں سب میں، کوئی مکمل نہیں

 سرینگر// بی جے پی لیڈر اور معروف فلمی اداکار شترو گن سنہا نے بھاجپا اور پی ڈی پی میںالزام و جوابی الزام کو غیر ضروری قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس بات کو یاد رکھا جانا چاہیے کہ’’کوئی بھی مکمل نہیں ہوتا‘‘۔ پارلیمنٹ کمیٹی برائے ٹرانسپورٹ، سیاحت و ثقافت کے سرینگر آئے وفد میں شامل سابق مرکزی وزیر شترو گن سنہا نے کہا ہے کہ یہ بات غلط ہے کہ الزام و جوابی الزمات ایک دوسرے پر عائدکئے جائیں کیونکہ کوئی بھی مکمل نہیں ہے۔سماجی وئب سائٹ ٹیوٹر پر شتروگن نے تحریر کیا’’ دوست سے تبدیل ہوئے دشمن کے مابین الزامات کا کھیل غیر ضروری ہے،آخر تک یہ بہترین الائنس رہا،ہم جموں کشمیر میں پی ڈی پی کے شراکت دار تھے،اور مشترکہ طور پر حکومت چلاتے تھے،مگر بدقسمتی سے کچھ ہفتے قبل ہم نے اپنی راہیں جدا کیں،اس لئے یہ کہنا غلط ہوگا کہ ہم ٹھیک ہیں،اور وہ غلط تھے‘‘۔ انہوں نے ایک اور ٹویٹ میں لکھا’’ یاد کروکوئی مکمل نہیں،ہم سب میں خامیاں بھی ہیں،اور مضبوطی بھی،اور اس کے ساتھ ہمیں سیکھنا چاہیے‘‘۔شتروگن گزشتہ روز سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی سے انکی رہائش گاہ پر ملاقی ہوئے۔اداکاری سے سیاست میں آئے شتروگن نے  ایک اور ٹویٹر پیغام میں تحریر کیا’’ میرے لئے ایک دفعہ کے دوست ہمیشہ کے دوست ہوتے ہیں، دیگر ممبران پارلیمنٹ کے ہمراہ سرینگر میں سیاحت،ثقافت اورٹرانسپورٹ کمیٹی کے سرکاری دورے کے دوران میں نے ذاتی طور پر جموں کشمیر کی سابق وزیر اعلیٰ اور خاندانی دوست محبوبہ مفتی سے ملاقات کی‘‘۔انہوں نے کہا ہم نے ہر ایک بات پر ما سوائے سیاست پر تبادلہ خیال کیا‘‘۔سنہا نے کہا کہ اس دوران انہوں نے پی ڈی پی کے کچھ نوجوان اور اچھے ممبران اسمبلی سے بھی ملاقات کی۔انہوں نے ٹیوٹر پر تحریر کیا’’ حالیہ دل برداشتہ واقعات کے باوجود میں نے انہیں جرتمند اور وفادار پایا،آج اٹل بہاری واجپائی ہم کو شکرگزاری کی ایک علامت کے طور پر یاد آئے،اور ہمیں چاہے کہ کشمیر کے مسائل کو حل کرنے کیلئے ہم کشمیریت،جمہوریت اور انسانیت کا درس دیں اور اس پر عمل کریں‘‘۔