حضرتِ سیّدہ فاطمہ الزہرہ رضی اللہ عنہا کے یومِ وصال کی مناسبت سے تقریب منعقد

 پونچھ //تین رمضان المبارک کو خاتونِ جنت حضرتِ سیّدہ فاطمہ الزہرہ رضی اللہ عنہا کے یومِ وصال کی مناسبت سے خطیب ِپونچھ مولانا مفتی فاروق حُسین مصباحی نے ایک خصوصی نشست کے دئوران اُن کے فضائل و کمالات بیان کئے۔ مولانا نے حدیث ِ مبارکہ کے حوالے سے ان کے فضائل بیان کرتے ہوئے بتایا کہ رسولِ کائنات ﷺ نے فرمایا کہ فاطمہ میرا ٹُکڑا ہیں اور آپ ﷺ اپنی پیاری بیٹی کی آمد پر کھڑے ہو جاتے اور اُن کا دستِ مبارک پکڑ کر اپنی نشست پر بٹھاتے۔ مولانا موصوف نے بتایا کہ آپ ﷺ کی اس سُنتِ مبارکہ سے اسلام میں بیٹیوں کی عظمت و رفعت کا اندازہ ہوتا ہے اور بیٹیوں کے ساتھ والدین کے سلوک کی تعلیم بھی ملتی ہے۔ اُنہوں نے فاطمہ رضی اللہ عنہا کی شان و عظمت بیان کرتے ہوئے کہا کہ کل بروزِ قیامت جب آپ رضی اللہ عنہا کا گُزر پُلصراط سے ہوگا تو تمام اہلیانِ محشر انبیاء و ائولیاء علیہم السلام و رحمتہ اللہ علیہم کو حُکم ہوگا کہ اپنی نگاہیں نیچی کر لیں کیوں کہ نبی مکرم ﷺ کی لختِ جگر کا پُلصراط سے گُزر ہو رہا ہے۔  اس موقع پر مولانا نے ماہِ رمضان المبارک کے فضائل بیان کرتے ہوئے کہا کہ بوقتِ افطار اللہ رب العزت روزے دار کی دُعا قُبول فرماتا ہے۔ روزے دار کی فضیلت کے بیان میں اُنہوں نے کہا کہ اللہ تعالیٰ نے جنت میں ریّان نام کا ایک دروازہ رکھا ہے جس میں سے وہ صرف روزہ داروں کو ہی گُزارے گااور اُس کے بعد اُس دروازے کو بند فرما دے گا۔  موصوف نے کہا کہ ایک مرتبہ رسولِ اکرم ﷺ کی بارگاہ میں ایک خاتون حاضر ہوئی تو حضور  ﷺ  نے اُسے کھانا کھانے کو کہا اُس نے عرض کی کہ آقا میں روزے دار ہوں تو آپ ﷺ نے فرمایا جس روزے دار کے سامنے کھایا پیا جائے اور وہ روزے پر قائم رہے تو اللہ تعالیٰ اُس کے پاس فرشتوں کی ایک جماعت بھیجتا ہے جو اُس کے لئے دُعا و استغفار میںمشغول رہتے ہیں۔ مولانا نے  کہا کہ اس حدیثِ پاک سے تو عام روزے کی فضیلت کا پتہ چلتا ہے اور پھر فرض روزوں کی فضیلت کا کیا عالم ہوگا۔ اُنہوں نے کہا کہ رمضان المبارک عزت دارہے اور روزہ بھی عزت والا ہے اور اس کی عزت کرنے والا بھی عزت دار ہے۔ لہذا عزت والا ہی عزت دار کی عزت کرے گا اور اس کے برعکس کا ٹھکانا جہنّم ہے۔ اس موقع پر اُنہوں نے قوم و ملت کی فلاح و بہبودی ، عزت و وقار اور صحت و سلامتی کے علاوہ بُلند درجات کے لئے خصوصی دُعا کی۔