حساس ترین 2اضلاع میں کہیں قطاریں اور کہیں پولنگ مراکز سنسان

شوپیان +پلوامہ// اننت ناگ پارلیمانی نشست کے آ خر ی مرحلے کے تحت  حساس ترین اضلاع شوپیان اور پلوامہ میںگرینیڈ اور پیٹرول بم حملوں، سنگ باری ، جھڑ پوں ،شلنگ اور مکمل بائیکاٹ کے بیچ سب سے کم پولنگ ریکارڈ کی گئی تاہم کھریو اور شوپیان میں لوگوں کی لمبی قطاریں بھی دیکھنے کو ملیں اورلوگوںکی ایک بڑی تعداد نے ووٹنگ میں حصہ لیا۔اس دوران ایک ڈی ایس پی اور نصف درجن مظاہرین شلنگ و پیلٹ سے زخمی ہوئے۔شوپیان اور پلوامہ میں صبح سات بجے پولنگ کا آغاز ہوگیا جو شام چار بجے تک جاری رہا ۔  بیشتر پولنگ مراکز پر کوئی گہما گہمی نظر نہیں آ ئی ۔پولنگ مراکز پر صرف سیکورٹی فورسز اور انتخابی عملہ کے اہلکار نظر آرہے تھے۔ کھر یو ، لدھوپانپور، نائر ہ پلوامہ اور کریوا مانلو شوپیان میں اچھی خاصی ووٹنگ ریکارڈ کی گئی یہاں لوگ قطاروں میں نظر آرہے تھے۔ کھر یو میں پی ڈی پی اور نیشنل کانفر نس کے درمیان ہوئی تصادم آ رائی میں پی ڈی پی کا پولنگ ایجنٹ زخمی ہوا ۔ نائرہ پلوامہ میں پی ڈی پی ورکروں نے کانگر یس کے ایک پولنگ ایجنٹ کی مارپیٹ کی ۔ترال کے بیشترپولنگ مراکز پر مکمل سناٹا چھا یا رہا ۔ پولنگ عمل کے تئیں لوگوں کی عدم دلچسپی کی وجہ سے اکثر و بیشتر پولنگ مراکز پر ویرانی چھائی ہوئی تھی جبکہ کئی ایک مقامات پر پولنگ مراکز فوجی چھاونیوں کا منظر پیش کر رہے تھے ۔ذاکر موسیٰ کے آ بائی علاقہ نورپورہ ترال میں ایک بھی ووٹ نہیں ڈالا گیا۔کریم آ باد پلوامہ، پلوامہ ٹائون،سانبورہ ، کاکہ پورہ،رتنی پورہ،آری ہل، گوسو، پاریگام، اونتی پورہ ، لتر، زینہ پورہ، ہف شرمال،پنجورہ ، مولو چتراگام امام صاحب اور دیگر کئی قصبوں اور دیہات میں کوی پولنگ نہیں ہوئی۔تاہم پانپور حلقہ انتخاب میں کھریو قصبہ اور اسکے آس پاس علاقے میں اچھی خاصی پولنگ ہوئی۔ اسی طرح راجپورہ کے ایک دو جگہوں پر بھی تھوڑی بہت پولنگ ہوئی۔شوپیان میں صرف کریوا مانلو، اور کچھ پہاڑی علاقوں میں ووٹ ڈالے گئے اور مرد و  خواتین بڑھ چڑھ کر ووٹ ڈال رہے تھے۔

جھڑپیں

مشتبہ جنگجوئوں نے رہمو، چھتہ پورہ اور ٹکن میں قائم پولنگ مراکز کو نشانہ بناکر گرینیڈ یا پیٹرول بم پھینکے تاہم کوئی جانی یا مالی نقصان نہیں ہوا۔قصبہ شوپیاں میں بائز ہائر سکنڈری سکول پولنگ بوتھ پر پتھرائو کے بعد نامعلوم افراد نے نشانہ بناکر پیٹرول بم پھینکا تاہم یہ نشانہ چوک کر باہر پھٹ گیا۔ اس میں بھی کوئی نقصان نہیں ہوا۔برتھی پورہ کرالہ چک ، بٹہ مڈن،نارہ پورہ،زوورہ، گول چوک شوپیان، علیال پورہ،بونہ بازار،بونہ گام،میمندر،نارپورہ، وہیل،دانگام وانگام،دیو پورہ، کاٹھو ہالن میں شدید پتھرائو ہوا جس کے دوران بٹہ مڈن میں چار افراد پیلٹ اور شلنگ سے زخمی ہوئے، جن میںسمیر احمد، باسط احمد، توصیف احمداورشاکر احمدشامل ہیں۔نارہ پورہ شوپیان میںڈی ایس پی شفاعت حسین پتھرائو کے دوران شدیدزخمی ہوا۔ترال میں ہیر گام بٹھنور میں پیٹرول بم پھینکا گیا تاہم کوئی نقصان نہیں ہوا۔اسکے بعد پتھرائو اور شلنگ ہوئی جبکہ ہوائی فائرنگ بھی کی گئی۔یہاں اتوار کی رات بھی پتھرائو اور شلنگ ہوئی تھی۔بٹہ گنڈ میں پتھرائو اور شلنگ ہوئی۔اسکے علاوہ لرگام،ماچھہامہ باغندر میں بھی پتھرائو اورشلنگ ہوئی۔ لال پورہ،کہلیل، آری پل، واگڈ میں شدید پتھرائو ہوا۔لرو میں  دن کے دو بجے کے بعد شدید پتھرائو ، شلنگ اور ہوائی فائرنگ ہوئی۔فورسز اہلکاروں نے کئی مکانوں کے شیشے بھی چکنا چور کردیئے۔لرگام اور کہلیل میں چار نوجوانوں کو گرفتار کیا گیا۔پلوامہ کے مورن قصبہ میں دن بھر شلنگ، پتھرائو اور پیلٹ کا استعمال کیا گیا۔مظاہرین نے فورسز کو الجھائے رکھا، جس کے دوران کئی نوجوان پیلٹ لگنے سے مضروب ہوئے۔اسکے علاوہ نیوہ میں احتجاجیوں نے نیشنل کانفرنس لیڈر کی گاڑی پر پتھرائو کیا جس کے نتیجے میں ایک سی آر پی ایف اہلکار زخمی جبکہ گاڑی کو جزوی نقصان پہنچا۔رہمو میں پولنگ بوتھ پر گرینیڈ پھینکا گیا تاہم کوئی نقصان نہیں ہوا۔ٹکن بٹہ پورہ میں بھی گرینڈ پھینکا گیا تاہم وہ نہیں پھٹ سکا۔اس دوران سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو وائرل ہوگئی ہے جس میںنائرہ پلوامہ میں پی ڈی پی کارکنوں کو ایک کانگریسی کارکن کو پیٹتے ہوئے دیکھا جاسکتا ہے۔