حد متارکہ کے نزدیکی دیہات کیلئے رابطہ سڑک کا کام شروع صفر لائن کے قریب متعدد دیہات کے لوگوں نے خوشی کا اظہار کیا

سمت بھارگو

راجوری//راجوری ضلع کے لائن آف کنٹرول کے قریب تسیالہ اور کچھ ملحقہ بستیوں کے لوگ رابطہ سڑک کی تعمیر کا عمل شروع ہونے کے بعد خوشی کا اظہار کررہے ہیں ۔سرحدی دیہاتی اُسے ایک خواب پوار ہونے سے تعبیر کر رہے ہیں جو سڑک کے ذریعے ان کے گاؤں کے دوسرے علاقوں سے رابطے کی راہ ہموار کرے گا۔تسیالہ گاؤںراجوری ضلع کی منجاکوٹ تحصیل میں لائن آف کنٹرول کے قریب واقع ہے اور ترکنڈی سیکٹر کے علاقے میں لائن آف کنٹرول کے قریب آبادہے۔اس علاقے کے لوگوں نے متعدد بار اس علاقے میں سڑک کی عدم دستیابی کو لے کر اعلیٰ حکام سے رجوع کیا ہے جس سے شہری آبادی کی زندگی بری طرح متاثر ہو رہی ہے کیونکہ لوگوں کو گاڑی میں سوار ہونے کیلئے ایک ساتھ کئی کلومیٹر پیدل جانا پڑتا ہے۔پنجگرائین اُپر۔اے پنچایت کے سرپنچ ممتاز اختر نے بتایا کہ خطے کے سرحدی دیہات ترقی کے لحاظ سے پسماندگی کا شکار ہیں جبکہ ان کو بنیادی سہولیات فراہم کرنے کیلئے ہر ممکن کوششوں کی ضرورت ہے ۔

انہوں نے کہا کہ ایل او سی کے قریب واقع علاقے میں تسیالہ اور دیگر بستیاں سڑک کے رابطے سے محروم ہیں اور اس کے ملحقہ علاقے میں نبارڈ کے تحت بنائی گئی سڑک بھی مناسب فنڈز کی کمی کی وجہ سے نامکمل ہے۔انہوں نے کہا کہ ’’اس علاقے میں رہنے والے لوگوں نے ہمیشہ سڑک سے رابطہ قائم کرنے کا مطالبہ کیا ہے لیکن حکومت نے اس اہم مطالبہ کو پورا کرنے کے لئے کچھ نہیں کیا جب تک کہ حال ہی میں ڈپٹی کمشنر راجوری وکاس کنڈل نے اس علاقے میں ایک عوامی میٹنگ کی اور یہ مطالبہ ان کے سامنے رکھا۔ انہوں نے مزید کہا کہ ڈپٹی کمشنر راجوری کی مداخلت سے ایک نئے روڈ پروجیکٹ کو منظوری دی گئی ہے اور لوگوں کا روڈ کنیکٹیویٹی کا خواب پورا ہونے والا ہے۔انہوں نے کہا کہ اس سڑک کی تعمیر سے زمین کی کٹائی کا کام شروع کر دیا گیا ہے، بہت سے غیر منسلک بستیوں کو سڑک کے لنک سے جوڑ دیا جائے گا۔علاقے کے سیاسی رہنما قیوم شیخ نے ضلعی انتظامیہ اور ضلعی ترقیاتی کونسل کی کاوشوں کو سراہتے ہوئے کہا کہ سڑک کی تعمیر کا مطالبہ کئی دہائیوں پرانا تھا لیکن لوگوں کو اس سہولت سے محروم رکھا گیا۔انہوں نے سرحدی علاقوں کی ترقی میں خلاء کو پر کرنے پر خصوصی توجہ دینے پر زور دیا اور کہا کہ بہت سی دوسری سڑکوں کی تعمیر انتہائی ضروری ہے ۔ضلع ترقیاتی کونسل راجوری کے وائس چیئرمین شبیر احمد خان نے سڑک کے رابطوں کو بہتر بنانے کے لئے کونسل اور حکومت کی کوششوں کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ اس سڑک کی تعمیر بہت ضروری کام ہے تاکہ مقامی آبادی کو سہولت فراہم کی جا سکے۔پردھان منتری گرام سڑک یوجنا (PMGSY) کے افسران نے اس دوران بتایا کہ اس سڑک کا نام نالہ تا دریاری براستہ تسیالہ ہے اور یہ PMGSY کے راجوری ڈویژن کے تحت آتی ہے۔ان کا کہنا تھا کہ اس منصوبے کی تخمینہ لاگت آٹھ کروڑ روپے ہے اور یہ پانچ گاؤں، بستیوں کو جوڑے گا۔