حدبندی کمیشن کا قیام غیر قانونی

سرینگر//نیشنل کانفرنس صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہا ہے کہ ناانصافی کیخلاف جدوجہدپارٹی کا بنیادی اصول ہے اور وہ لوگوں کیساتھ ہورہی ناانصافیوں کیخلاف برسرجہد ہے اورپارٹی کسی بھی صورت میں اپنے اصولوں سے انحراف نہیں کرے گی۔وہ کٹرہ، سانبہ، نگروٹہ اور دیگر علاقوں سے آئے لوگوں سے بات کررہے تھے۔حدبندی کمیشن کی رپورٹ کو ایک بار پھر مسترد کرتے ہوئے صدرِ نیشنل کانفرنس نے کہاکہ کمیشن کی رپورٹ ناانصافی پر مبنی ہے، جس کا مقصد جموں وکشمیرکے عوام کو علاقائی، لسانی اور مذہبی بنیادوں پر تقسیم کرکے بھاجپا کو انتخابات میں فائدہ پہنچانا ہے۔ اُن کا کہنا تھاکہ نیشنل کانفرنس کے تینوں ایسوسی ایٹ ممبران نے کمیشن میں اپنا جواب داخل کردیاہے اور ایسی کسی بھی مشق سے گریز کرنے کیلئے کہا گیا ہے۔ ہمارا مانناہے کہ جس قانون کے تحت اس حدبندی کمیشن کا قیام عمل میں لایا گیاہے اُس کی جوازیت سپریم کورٹ میں زیر سماعت ہے اور اس مشکوک قانون کے تحت جموںوکشمیر کی حدبندی کرنا سپریم کورٹ کی توہین کے مترادف ہے۔ انہوںنے کہا کہ نشستوں کی حدبندی آبادی کے تناسب سے ہونی چاہئے لیکن یہاں من مانے طریقے سے نشستوں کی حدبندی کی گئی ہے اور کئی تاریخی اہمیت کی حامل نشستوں کا نام و نشان ہی ختم کردیا گیاہے ۔ڈاکٹر فاروق نے کہاکہ بھاجپا کے ان مذموم منصوبوں کا مقابلہ صرف ہوشیاری اور متحد ہوکر کیا جاسکتا ہے اور وقت کا تقاضا ہے کہ ہم عملی طو رپر اتحاد و اتفاق میں رہیں اور جموں و کشمیر کیخلاف ہورہی ہر ایک سازش کا ڈٹ کر مقابلہ کریں۔
 
 

پی اے جی ڈی اجلاس 26فروری کو طلب  

 سرینگر// گپکار الائنس نے حدبندی کمیشن کی حالیہ رپورٹ اور دیگر کئی اہم معاملات پر تبادلہ خیال کرنے کیلئے 26 فروری کو سرینگر میںگپکار الائنس اجلاس صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے سرینگر میں بلایا ہے جس میں پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی،سی پی آئی ایم ،عوامی نیشنل کانفرنس، اور سی پی آئی کے رہنما شرکت کریں گے۔اجلاس میں جموں و کشمیر کی موجودہ صورتحال پر تبادلہ خیال اور غور و خوض کیا جائیگا۔الائنس جموں کشمیر کی صورتحال کے بارے میں ملک کی مختلف سیاسی جماعتوں کو باور کرائے گا اور اس مقصد کی خاطر اراکین کی ایک ٹیم تشکیل دی جاسکتی ہے۔